skip to Main Content
ڈاکٹر فضل الرحمٰن۔ تنزانیہ : تنزانیہ کے چار صوبوں میں مختلف جماعتی پروگرامز

خدا تعالی کے فضل و کرم سے جماعت احمدیہ تنزانیہ تبلیغ، تربیت اور خدمت خلق کے میدان میں بھر پور کوششیں کر رہی ہے جسے عوام میں اور حکومتی سطح پر پذیرائی مل رہی ہے۔ امیر صاحب تنزانیہ محترم طاہر محمود چوہدری کی براہ راست نگرانی میں بہت سے منصوبے مکمل کئے جا رہے ہیں۔ خدمت خلق کے کاموں میں ہیو مینٹی فرسٹ اور IAAAE بہت فعال کردار ادا کر رہے ہیں۔
اکتوبر 2019ء کے آخری ہفتے میں IAAAE کے چیئر مین مکرم اکرم احمدی تنزانیہ تشریف لائے اور امیر صاحب کی قیادت میں ایک جماعتی وفد کے ہمراہ تنزانیہ کے چار صوبوں کا دورہ کیا۔ اس دورے کی مختصر رپورٹ درج ذیل ہے۔
مورخہ 24؍اکتوبر کو GEIETA ریجن کے ایک گاؤں NYAMWILOLELWA میں ایک مسجد کا افتتاح عمل میں آیا۔ یہ مسجد GEIETA شہر سے 50کلو میٹر دور ہے ۔ یہاں اس وقت جماعت تین سو نو مبائعین پر مشتمل ہے۔ اس مسجد کا نام حضور ایدہ اللہ نے مسجد محمود تجویز فرمایا۔ اس افتتاحی تقریب میں کل 800افراد نے شرکت کی۔
مورخہ 25؍اکتوبر کو SIMIYU صوبہ میں ایک مسجد کے افتتاح کی تقریب عمل میں آئی۔ اس کے علاوہ پانی کے دو کنوئوں کا افتتاح بھی کیا گیا ۔ یہاں 900 افراد نے ان تقریبات میں شرکت کی۔
مورخہ 26؍ اکتوبر کو SHINIYANGA صوبہ میں ایک مشن ہاؤس اور پانی کے دو کنوئوں کا افتتاح کیا گیا۔
اگلے روز 27؍اکتوبر کو KAHAMA میں ایک مسجد اور پانی کے دو کنوئوں کے افتتاح کی تقریب عمل میں آئی۔
مورخہ 28؍اکتوبر کو SONGAMILA گاؤں میں پانی کے ایک کنویں کا افتتاح کیا گیا۔
افریقہ میں پانی کی قلت کے پیش نظر جماعت احمدیہ افریقن عوام کو صاف پانی کی فراہمی کے لئے بھرپور کوششیں کر رہی ہے ۔ اگرچہ عوام اور حکومتی سطح پر اسے سراہا جا رہا ہے مگر جماعت احمدیہ یہ کام محض اللہ تعالی کی رضا اور خدمت انسانیت کے سچے جذبے سے سر انجام دے رہی ہے ۔ دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ ہماری ان کوششوں میں برکت دے اور انہیں قبول فرمائے آمین

image_printپرنٹ کریں