skip to Main Content
رضیہ عنبر ۔جرمنی: پیارے حضور کے دورہ یورپ پر جذبات

جاگ جاگ اے یورپ جاگ ذرا
کیوں آ رہے خواب خرگوش کے مزے تجھے
منزلیں تجھ کو بلا رہی ہیں مدام
خدا کی رحمتوں نے چن لیا ہے تجھے
پسر مسیح کے مبارک قدم بار بار
چومنے کی سعادت ہو رہی ہے نصیب تجھے
اٹھ ذرا دیکھ کہ دن چڑھا ہے مبارک
سورج کی کرنیں کر رہی ہیں بار بار بیدار تجھے
بند کر کھڑکیاں تعصب و عناد کی شتاب
وا ہونے کو بلا رہے ہیں رحمتوں کے باب تجھے
مشرق کے افق پہ اب سورج پڑ چکا ہے ماند
اے سر زمین مغرب “طلوع شمس ’’کی آ رہی ہے ندا تجھے
اٹھ دیکھ کہ خدا کے گھر بن رہے ہیں جا بجا
تا ان میں مل جائے بلاؤں سے حفظ وامان تجھے
خلیفہ خدا ہوا ہے مخاطب پارلیمنٹ سے تیری
نصیب اس کی ملاقات کا ہوا ہے اعزاز تجھے
اے جرمنی تو اپنی قسمت پہ جتنا بھی ناز کرے
کم ہے کہ نہیں کچھ اس کا اندازہ و عرفان تجھے
کرے ہے جو تو پسر مسیحا کی پذیرائی
ملے گی آسماں سے بڑی عز و تکریم تجھے
ایک دن آغوش اسلام میں تو آ ہی جائے گا
لا الہ کی گونج ہر سمت دے گی سنائی تجھے
تمنا ہے کہ تیری دعا اے مسیح قبول ہو جائے
محو پرواز ہوں قافلے سفید طائروں کےملنے کو تجھے

image_printپرنٹ کریں