skip to Main Content
مسجد نبوی میں ادائیگی نماز کی فضیلت

حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز فرماتے ہیں۔
ایک دفعہ حضرت ارقمؓ نے بیت المقدس جانے کے لئے رخت سفر باندھا، تیاری کی، جانا چاہتے تھے اور رسول کریم ﷺ کے پاس سفر پر جانے کے لئے اجازت چاہی تو آپؐ نے دریافت فرمایا کہ کیا تم وہاں بیت المقدس میں کسی ضرورت کے لئے یا تجارت کی غرض سے جا رہے ہو؟ حضرت ارقم ؓنے جواب دیا کہ یا رسول اللہ ﷺ! میرے ماں باپ آپؐ پر فدا ہوں۔ کوئی کام نہیں ہے اور نہ تجارت کی غرض سے جانا ہے بلکہ بیت المقدس میں نماز پڑھنا چاہتا ہوں۔ تو اس پر رسول اللہ ﷺ نے فرمایا کہ میری اس مسجد میں ایک نماز اور مسجدوں کی ہزاروں نمازوں سے بہتر ہے یعنی یہاں مدینے میں سوائے کعبہ کے ۔جس پر حضرت ارقم ؓنے اپنا ارادہ بدل لیا۔

(اسد الغابہ جلد 1صفحہ 187 ارقم بن ابی الارقمؓ مطبوعہ دار الکتب العلمیہ بیروت2003ء )
(خطبہ جمعہ فرمودہ8 فروری2019ء)

image_printپرنٹ کریں