skip to Main Content
رپورٹ۔ راجہ برہان احمد۔لندن:خلافت خامسہ کے دور کي پہلي مسجد  جس کا افتتاح ماہ رمضان کے بابرکت مہينے ميں ہوا

مُبَارِکٌ وَّمُبَارَکٌ وَّکُلُّ اَمْرٍ مُّبَارَکٍ یُّجْعَلُ فِیْہِ

خلافت خامسہ کے دور کي پہلي مسجد جس کا افتتاح ماہ رمضان کے بابرکت مہينے ميں ہوا

17؍مئي 2019ء جمعة  المبارک کا دن تاريخ احمديت  ميں ايک اہم دن کے طور پر ہميشہ ياد کيا  جائے گا ۔ يہ دن جہاں ايک طرف احباب جماعت کو اللہ تعاليٰ  کي  حمد وثنا  ء  اور  شکر کے گيت گانے کي طرف توجہ دلائے گاوہاں  اس بات پر بھي گواہ رہے گا کہ  احمديت کا قافلہ ترقي کي ايک اور منزل طے کرگيا ۔جمعہ کے دن سے چند روز قبل ہي انتظاميہ کو اس بات کا ارشاد موصول ہوا کہ پيارے آقا حضرت خليفة المسيح الخامس ايدہ  اللہ  تعاليٰ بنصرہ  العزيز 11رمضان المبارک1440ہجري کا خطبہ جمعہ مسجد مبارک اسلام آباد ٹلفورڈ برطانيہ سےبراہ راست ارشاد فرمائيں گے۔

اس اہم اور تاريخي موقع کي اہميت کو مدنظر رکھتے ہوئے بھر  پور تيارياں کي گئيں ۔ خدام الاحمديہ کي  ٹيميں تشکيل دي گئيں جن کي ڈيوٹي سيکيورٹي، پارکنگ ، سکينگ ، صفائي ، سيٹ اپ اور تربيت کي لگائي گئيں ۔ 15اپريل 2019ء حضور انور ايدہ اللہ تعاليٰ بنصرہ العزيز کي اسلام آباد آمد سے ہي خدام الاحمديہ يوکے اس نئے مرکز احمديت اور قصر خلافت کي  حفاظت کي ڈيوٹي چوبيس گھنٹے دے رہي ہے ۔البتہ اس خاص دن کے لئے جامعہ احمديہ  کے يوکے کے 62طلبہ کے علاوہ برطانيہ کي مختلف مجالس کے 100سو سے زائد خدام ڈيوٹي کےلئے صبح سے ہي اسلام آباد پہنچنا شروع ہوگئے تھے  ۔

چند دن پہلے موسم بارش کي پيشگوئي کررہا  تھا مگر  ہميشہ کي طرح اس دن موسم خوشگوار رہا ۔صبح دس بجے سے ہي احباب و خواتين کشاں کشاں اس تاريخي خطبہ جمعہ ميں شامل ہونے کے لئے آنا شروع ہوگئے۔خواتين کےلئے ہال ميں کچھ جگہ مخصوص تھي اور ايک اضافي مارکي بھي لگائي گئي تھي اسکے علاوہ چھوٹے بچوں کے لئے ہال سے ملحقہ ايک کمرہ مخصوص کيا گيا ،جبکہ مرد وں کے لئے مسجد ،ہال کا اگلا حصہ اور ہال اور مسجد کے درميان مسقف ايريا مخصوص تھا۔پہلے آنے والے افراد ترتيب سے بيٹھتے گئے اور پھر اسي ترتيب سے 12.20منٹ پر مسجد ميں گئے جو چند منٹوں ميں ہي بھر گئي اور پھر باقي احباب ہال ميں صفوں ميں بيٹھ گئے جہاں جگہ جگہ ٹي وي سکرينيں لگي ہوئي تھيں۔جمعہ کي پہلي اذان 12.30پر مکرم فيروز عالم صاحب نے دي ۔اکثر احباب و خواتين نے اسلام آباد آنے کے بعد سے اپنا وقت دعاؤں،نوافل اور آذان کے بعد سنتوں کي ادائيگي ميں گزارا۔

حضور انور ايدہ اللہ تعاليٰ بنصرہ العزيز 1.05منٹ پر قصر خلافت سے مسجدمبارک  کے محراب کے سامنے والے دروازے کي طرف تشريف لائے اور افتتاحي پليٹ کي نقاب کشائي کرنے کے بعد محراب کے دائيں طرف دورازے سے مسجد کے اند ررونق افروز ہوئے ۔پيارے آقا  نے ڈائس پر کھڑے ہوکر فرمايا:

‘‘حضرت خليفة المسيح الثاني رضي اللہ عنہ نے جب ربوہ کي مسجد مبارک کا افتتاح فرماياتو اس روز فرمايا تھا کہ افتتاح سے پہلے دو نفل کا انتظام ہونا  چاہيئے ليکن اس وقت تو وہاں انتظام نہيں ہوسکتا تھا تو انہو ں نے فرماياکہ ہم سجدہ شکر کرينگے ۔عموماً روايت يہ ہے کہ ميں جب افتتاح کي پليٹ کا پردہ اٹھاتا ہوں تو وہاں دعا کرتے ہيں۔ آج اسي  طريق پر عمل کرتے ہوئے بجائے دعا کہ ابھي ميں سجدئے شکر کرونگا آپ اس ميں شامل ہوں ۔اللہ تعاليٰ نے ايک چھوٹا سا مرکز ہميں عطا فرمايا،يہ  مسجد عطا فرمائي اور اس کے بعد پھر باقاعدہ خطبہ شروع ہوگا ۔سجدئے شکر کريں اللہ اکبر’’

حضور انور کي آمد ،سجدہ شکر ،آذان اور خطبہ جمعہ MTAانٹرنيشنل کے ذريعے دنيا بھر ميں بسنے والے ناظرين و سامعين نے ديکھا ، سنا اور سجدہ شکر ميں شامل ہوئے ۔نماز جمعہ کي ادائيگي کے بعد بھي اسلام آباد ميں ايک عيد کا سا ماحول رہا ۔يہاں موجود ہر کوئي ايک دوسرے کو مبارک باد پيش کررہا تھا اور اللہ تعاليٰ کے شکر و احسان اور فضل کي باتيں ہورہي تھيں ۔کثرت کے ساتھ لوگ مسجد  اور اس سے ملحقہ حصوں کي اور ان کے سامنے تصاوير بناتےرہےنيز مسجد ميں نوافل ادا کرتے  رہے ۔ يہ سلسلہ آہستہ آہستہ  لوگوں کے رخصت ہونے کے ساتھ کم ہوتا گيا ۔کچھ تعداد نماز عصر تک رہي اور نماز عصر کي ادائيگي کے بعد اپنے گھروں کو روانہ ہوئي ۔ اس تاريخي موقع پر شاملين کي تعداد 2200تھي جن ميں 1000کے قريب خواتين اور 1200کے لگ بھگ مرد تھے ۔

حضور انور ايدہ اللہ تعاليٰ  بنصرہ العزيزنے خطبہ جمعہ کے اختتام پر فرمايا

‘‘اللہ تعاليٰ سب کو جزاء دے جنہوں نے کام کيا۔ اللہ تعاليٰ فضل کرے اور آئندہ بھي مزيد منصوبے مکمل کرنے کي توفيق دے۔ اللہ تعاليٰ نے عمومي طور پر  جماعت کومالي  قرباني کي توفيق دي ہے اسي قرباني سے يہ تمام منصوبے پايہ تکميل کو پہنچ رہے ہيں اور آئندہ  بھي پہنچيں گے۔انشاء اللہ ۔۔۔اللہ تعاليٰ تمام افراد جماعت کي مالي استطاعت کو بھي بڑھاتا  چلاجائے اور   ان کے اموال و نفوس ميں بھي برکت ڈالے ۔اللہ تعاليٰ سب  کو جزاء دے اور ان کے اموال و نفوس ميں برکت عطا فرماتا  چلا جائے۔ آمين۔’’

image_printپرنٹ کریں