skip to Main Content
انجینئر محمود مجیب اصغر: جلسہ سالانہ ویسٹ کینیڈا 2019ء

اللہ تعالیٰ کے فضل سے جلسہ سالانہ ویسٹ کینیڈا 2019ء کیلگری کے مضافات میں indigneous( فسٹ نیشن) کے ایریا کے سیون چیفس سپورٹسپلیس (seven chiefs sports plex 19 Bullhead Rd Priddis, AB) میں 24 اور 25 تاریخ کو ہفتہ اور اتوار کے روز اپنی پوری شان اور اعلیٰ روایات کےساتھ نہایت کامیابی سے منعقد ہوا ۔
اللہ تعالیٰ کا خاص احسان اور دل اس کی حمد سے لبریز ہے کہ اس عاجز کو بھی اس جلسہ میں شامل ہونے کا سنہری موقع میسر آگیا۔
یہ عاجز مع اہلیہ جون کے آخر میں پاکستان سے عازم سفر ہوا تھا اور لندن پہنچ کر زیارت مرکز جدید اسلام آباد ٹلفورڈ اور دربار خلافت میں حاضری سے مشرف ہوا۔
اس کے بعد ہم اپنی ایک نواسی کی شادی میں شمولیت کے لئے ابھی کینیڈا میں ہی تھے کہ اللہ تعالیٰ نے جلسہ سالانہ ویسٹ کینیڈا میں شامل ہونے کا اپنے خاص فضل سے موقع عطا فرما دیا ۔ ذَالِكَ فَضْلُ اللَّهِ يُؤْتِيهِ مَن يَشَاءُ ۚ وَاللَّهُ ذُو الْفَضْلِ الْعَظِيمِ
جلسہ سالانہ جس کا آغاز 1891ءمیں قادیان کی مبارک بستی سے ہوا تھا ۔اپنے کئی ادوارسے گزر کر وسع مکانک کا مظہر بن کر دنیا کے اطراف و جوانب میں پھیل چکا ہے۔ جس الہی پیغام کو امرتسر، دہلی، لاہور، سیالکوٹ، جالندھر وغیرہ کے پبلک جلسوں میں علماء سوء نے ہنگامہ آرائی کا نشانہ بنایا ان کو چیلنج دینے کے لئے حضرت بانئ جماعت احمدیہ مرزا غلام احمد قادیانی علیہ السلام نے ایک رسالہ تصنیف فرمایا جس کا نام “ آسمانی فیصلہ” رکھا اور مشورہ کے لئے اپنے مخلص صحابہ کو قادیان بلوایا۔حضور کا یہ مضمون مسلمانوں کے لیڈر مولوی عبد الکریم صاحب سیالکوٹی کی بلند اور پرشوکت الفاظ میں سنا گیا۔
تمام صحابہ نے قرآنی معیار پر نشانات، امور غیبیہ، قبولیت دعا اور قرآن کریم کے دقائق اور معارف کے چیلنج پر مشتمل اس رسالہ کی اشاعت کا مشورہ دیا تمام صحابہ نےحضرت اقدس سے ملاقات کا شرف حاصل کیا آپس میں تعارف حاصل ہوئے دعوت الی اللہ کے لئے مشورے ہوئے، اجتماعی دعا ہوئی اور بہت سی برکات کا یہ جلسہ باعث ہوا امام کا کلام سننے اور دوسروں تک پہنچانے کے لئے اس پلیٹ فارم کو پسند کیا گیا۔ حضرت اقدس نے کتاب کی اشاعت کے ساتھ ہی ایک اشتہار منسلک فرما دیا اور اگلے سالوں میں جلسہ ْ منعقد کرنے کا معروف فیصلہ فرمایا اور ممکنہ برکات کے ذکر سے اس اشتہار کو معطر فرمایا نیز فرمایا۔
“جس قدر احباب محض للہ تکلیف اٹھا کر حاضر ہوئے خدا ان کے ہر قدم کا ثواب ان کو عطا کرے”
حضرت اقدس کی حیات طیبہ میں تقریباً ہر سال جلسہ سالانہ قادیان منعقد ہوتا رہا اور آگے آپ کے خلفاء نے بھی اس سلسلے کو جاری رکھا ۔
اب تو مرکزی جلسہ کے علاوہ دنیا کے بیشتر خطوں اور علاقوں میں سال بھر اپنی پاکیزہ روایات کے ساتھ جلسے جاری رہتے ہیں جن میں بعض جگہ حسب حالات خلیفہ وقت شرکت فرماتے رہتے ہیں۔
ان جلسوں پر جو وعدے خدا تعالیٰ نے حضرت اقدس سے کئے تھے انہیں ہم اپنی آنکھوں سےپورا ہوتادیکھ رہے ہیں۔
آپ کو اللہ تعالیٰ نے 1886ء میں بشارت دی تھی ۔“اور تیری نسل کثرت سے ملکوں میں پھیل جائے گی”
چنانچہ ہر ایک ملک میں جہاں بھی جلسہ منعقد ہو رہا ہے آپ کی روحانی اور جسمانی نسل نظر آتی ہے۔
1891ء کا الہام ہے “اس عاجز پر ظاہر کیا گیا ہے کہ جو بات اس عاجز کی دعا کے ذریعہ سے رد کی جائے گی وہ کسی اور ذریعہ سے قبول نہیں ہو سکتی اور جو دروازہ اس عاجز کے ذریعہ سے کھولا جائے وہ کسی اور ذریعہ سےبند نہیں ہوسکتا”
1892ء کا الہام ہے۔
چل رہی ہے نسیم رحمت کی
جو دعا کیجئے قبول ہے آج
چنانچہ جلسہ سالانہ پر اجتماعی دعاؤں کا موقع ملتا ہے حضرت اقدس اور آپ کے بعد آپ کے خلفاء نے جلسہ سالانہ میں شامل ہونے والوں کے لئے بہت دعائیں کی ہیں
جلسہ پر عام طور پر یہی کیفیت ہوتی ہے کہ ہمارے حق میں حضرت اقدس اور آپ کے خلفاء کی دعائیں قبول ہو رہی ہیں اس حقیقت کا اس عاجز کو بھی ایک لمبا تجربہ ہے ہر قدم پر جلسہ پر حاضر ہونے والوں کو ثواب ملتا ہے۔
حضرت اقدس نے ایک مرتبہ فرمایا۔
“مخالف ہماری تبلیغ کو روکنا چاہتے ہیں، مجھے تو اللہ تعالیٰ نے میری جماعت ریت کے ذروں کی طرح دکھائی ہے”
(رجسٹر روایات صحابہ جلد 8 صفحہ 203 روایت میاں فضل الدین عبداللہ صاحب ولد محمد بخش صاحب قادیان)
چنانچہ جلسہ سالانہ کے پلیٹ فارم سے علمی مسائل سمجھ کر اور جماعت کا conduct اور پاکیزہ روایات دیکھ کر بہت بڑے پیمانے پر دنیا کی آبادی تک اسلام احمدیت کا پیغام پہنچ جاتا ہے اور سعید روحیں حق کو قبول کرتی جاتی ہیں اور ریت کے ذروں کی طرح جماعت بڑھ رہی ہے نیز جلسہ ہائے سالانہ جماعت کی اندرونی تربیت اور دلوں کے زنگ اتارنے کا باعث بنتے ہیں صحبت صالحین کی برکت اس کے علاوہ ہے

ویسٹ کینیڈا (West Canada)

کینیڈا 10 صوبوں اور 3 territories پر مشتمل نارتھ امریکہ کا بہت بڑا اور وسیع ملک ہے اور رقبے کے لحاظ سے دنیا کا دوسرا بڑا ملک ہے بلکہ مغربی کرہ ارض (westren hemisphere) میں سب سے بڑا ملک ہے اس کا کل رقبہ 9.984 ملین مربع کلومیٹر بنتا ہے۔
ویسٹ کینیڈا 4 صوبوں _ مینی ٹوبہ(Manitoba)، سسکاچیون(Saskatchewan), البرٹا (Alberta) اور برٹش کولمبیا (British Columbia) پر مشتمل ہے۔کیلگری (Calgary) جہاں اس سال ویسٹ کینیڈا کا جلسہ سالانہ منعقد ہوا ہے صوبہ البرٹا (Alberta) کا سب سے بڑا شہر ہے اور صوبہ کی سب سے بڑی جماعت اسی شہر میں ہے یہیں کینیڈا کی سب سے بڑی اور سب سے خوبصورت مسجد بیت النور واقع ہے جو خلافت خامسہ میں تعمیر ہوئی تھی اور حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز نے اس کا افتتاح فرمایا تھا۔
کیلگری کے مئیر کا ویڈیو پیغام
کینیڈا میں خدا کے فضل سے جماعت کے گورنمنٹ اور لوکل مینجمنٹ کے ساتھ بہت خوشگوار تعلقات ہیں یہ لوگ جلسہ پر شامل بھی ہوتے ہیں اور جماعت کی برملا تعریف بھی کرتے ہیں۔اس جلسہ پر کیلگری کے مئیر Naheed Nenshi صاحب نے جلسہ کے لیے اپنا وڈیو پیغام بھیجا جو کہ سکرین پر جلسہ گاہ میں دکھایا اور سنایا گیا جس کےلئے ہر احمدی کا دل اللہ تعالی کی حمد سے لبریز ہے۔
اس جلسہ کی امتیازی شان
اس جلسہ کی ایک امتیازی شان یہ تھی کہ یہاں کے قدیم باشندوں indigenous people یعنی فسٹ نیشن کےلوگوں نے بھی شمولیت کی اور ان کے chiefs نے خطاب کیا ان کے چیفس نے روایتی لباس اور سر پر بڑا پرندوں کےپروں والا امتیازی تاج پ کیہنا ہواتھا جو ان کو بہت سجتا ہے۔

برٹش کالونائیزیش (colonization)

سے ہزاروں سال پہلے سے یہ لوگ اس خطہ ارض پر رہتے چلے آرہے ہیں خدا کے فضل سے ان میں اب احمدیت یعنی حقیقی اسلام کا نفوز ہو رہا ہے
ایک بار نیشنل امیر کینیڈاملک لال خان صاحب نے خاکسار سے ذکر کیا تھا کہ ان لوگوں کو قریب لانے کی حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالٰی بنصرہ العزیز نے خاص طور پر ہدایت فرمائی ہوئی ہے اور یہ خلافت کی ہی برکت ہے کہ اللہ تعالی ان کو قریب لا رہا ہے اور یہ لوگ جماعت احمدیہ کے بہت مداح ہیں جیسا کہ ان کے چیف جلسہ پر اپنے مختصر خطاب میں ذکر کرتے ہیں اور حضرت خلیفۃ المسیح الثالث رحمہ اللہ تعالی کا دیا ہوا ماٹو “لوو فار آل ہیٹرڈ فار نن”
“ love for all, hatred for none”
دہراتے ہیں جو کہ جماعت احمدیہ کی ملک ملک میں پہچان بن گیا ہے
اس جلسہ کی ایک امتیازی شان یہ بھی دیکھنے میں آئی کہ جامعہ احمدیہ کینیڈا کے ینگ گریجوایٹس (جنہوں نے جلسہ پر تقاریر کیں) کا معیار بہت اعلیٰ ہے ۔
ڈیوٹی پر مامور رضا کاروں کا کنڈکٹ (conduct) بھی قابل ستائش تھا اور وہ نہایت خوش اسلوبی سے خدمت کی توفیق پا رہے تھے۔
خاکسار کو سروس کے دوران مختلف پراجیکٹس جیسے بجلی کی ٹرانسمشن لائنیں، گرڈ اسٹیشن، سڑکیں اور برجز، اسی طرح تھرمل اور ہائیڈل پاور اسٹیشن تعمیر کروانے کا موقع ملا ہے اور ہر جگہ افراد جماعت سے تعارف حاصل ہوتا رہا ہے اس جلسہ پر بھی بعض ان لوگوں سے بھی ملاقات ہوئی جن کا تعلق ان متفرق مقامات سے تھاجہاں یہ عاجز رہتا رہا ہے کئی بچے جوان ہو کر ان ملکوں میں آگئے ہیں اور بعض دوسرے مالک امریکہ وغیرہ سے آئے ہوئے تھے جن سے سالوں بعد رابطہ ہوا ہے یہ سب جلسہ کی برکات ہیں غرض جلسہ کے دو دن اپنا گہرا اثر چھوڑ گئے ہیں۔
جلسہ سالانہ کی ایک عظیم الشان برکت استحکام خلافت اور جماعت کی ترقی اور اس کے مقابل کھڑے ہونے والے معاندین کی بڑی ذلت کے ساتھ پردہ دری اور ناکامی بھی ہے۔
دعا ہے کہ خلافت کے زیر سایہ اللہ تعالیٰ سلسلہ عالیہ احمدیہ کو ہر طرح کی ترقیات عطا فرماتا چلا جائے اور باہمی اخوت اور آپس میں للہی محبت بڑہاتا رہے اور ہمارے سب ہم وغم دور فرما دے اور ہمیں سلسلہ عالیہ کے لئے کار آمد وجود بنا دے اور انجام بخیر کرے اور ہم تقوی شعار اولادیں چھوڑ کر جائیں۔ آمیں یا ارحم الراحمین

image_printپرنٹ کریں