skip to Main Content
سعید الدین احمد (سیکرٹری کمیٹی گلدستہ لندن): جلسہ سالانہ برطانیہ 2019ء کا کامیاب انعقاد

محض خدا کے فضل کے ساتھ جلسہ سالانہ برطانیہ 2019ء کا آلٹن ہمپشائرمیں کامیاب انعقاد ہوا۔چونکہ جلسہ سالانہ جماعت احمدیہ کی تاریخ میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے۔ جس میں جماعت احمدیہ عالمگیر حضور انور کے روح پرور خطابات سے مستفید ہوتی ہے۔ دوران سال جماعت احمدیہ عالمگیر پر ہونے والے افضال الہٰیہ کا نئی جماعتوں کےقیام اور نئی بیعتوں کا ذکر ہوتا ہے۔ جیسے ہی جلسہ سالانہ کا اختتام ہوتا ہے تو ساتھ ہی اگلے سال کے جلسہ کی تیاری کا پروگرام شروع ہو جاتا ہے اور تمام کارکنان نہایت خوش اسلوبی کے ساتھ سارا سال جلسہ سالانہ کو کامیاب بنانے کے لئے بہت زیادہ محنت سے کام کرتے ہیں اور خدا کے فضل سے اور حضور انور کی دعاؤں سے ہم سب ایک روح پرور جلسہ سے لطف اندوز ہوتے ہیں۔
حضور انور ایدہ اللہ تعالیٰ نے جلسے کے پروگرام کی تشکیل کے لئے ایک کمیٹی مقرر فرما رکھی ہے۔ یہ کمیٹی افسر صاحب جلسہ گاہ مکرم عطاء المجیب راشد کے ماتحت کام کرتی ہے۔ یہ کمیٹی جلسے کے انعقاد سے 6ماہ قبل باقاعدہ اپنے کام کا آغاز کردیتی ہے۔ تمام سیشنز میں ہونے والی تلاوت، نظم ، تقاریر کے عناوین حضور انور کی منظوری سے ہوتے ہیں۔ اللہ کے فضل سے تمام مراحل میں حضور انور بنفس نفیس ذاتی دلچسپی لیتے ہوئے رہنمائی فرماتے ہیں جس سے کام میں برکت بھی پڑتی ہے اور نہایت خوش اسلوبی سے سرانجام بھی ہوجاتے ہیں۔ حضور انور کی موجودگی میں پیش کی جانے والی تلاوت اورنظموں کا حضور انور کی روح پرور خطابات سے ایک گہرا تعلق ہوتا ہے۔

معائنہ انتظامات جلسہ سالانہ یوکے 2019ء

جلسہ سالانہ کے انتظامات کا باقاعدہ آغاز تو مورخہ 28جولائی کو ہوا۔ تاہم 26جولائی کو حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ نے نماز جمعہ کی ادائیگی کے بعد بیت الفتوح میں رہائش اور کھانے کی مارکیز کے معائنہ کے بعد بعض دفاتر کا بھی معائنہ فرمایا اور ہدایات دیں۔ بعد ازاں ہزاروں مرد و زن نے دوپہر کا کھانا مارکی میں تناول کیا۔
جلسہ سالانہ کے انتظامات اور مہمانوں کی گہما گہمی کئی روز سے دیکھنے میں آ رہی تھی۔ گزشتہ جمعہ کےروز لوگوں کا بڑھ چڑھ کر ایک دوسرے سے گلے ملنا منی (mini)جلسہ سالانہ کا منظر پیش کر رہا تھا ۔ جماعتی قیام گاہوں بیت الفتوح، بیت الاحسان، مسجد فضل لندن سے ملحقہ گیسٹ ہاؤسزاور اسلام آباد میں مہمانوں کی آمد کا سلسلہ کئی روز پہلے جاری ہوگیا۔ قادیان اور ربوہ سے مرکزی وفود کی آمد گویا بہار کی آمد ہے جو ذہنوں کو مرکزی جلسہ سالانہ کی یادوں کی خوشبو سے معطر کرتے ہیں۔ مسجد مبارک اسلام آباد کے گردو نواح میں جشن کا سماں ہے۔ دور دراز ملکوں سے خصوصی ملاقات کے لئے آنے والے مسرتیں اور برکتیں سمیٹ کر لوٹنے کا منظر بھی قابل دید ہے مسجد مبارک نمازیوں سے پر ہو جانے پر ملحقہ ملٹی پرپز ہال ایوان مسرور میں نمازوں کی ادائیگی کا سلسلہ جاری رہا۔ جلسہ سالانہ کی انتظامیہ آنے والے مہمانوں کی خدمت اور جلسہ کے دیگر انتظامات میں ہر درجہ مصروف ہے ۔

جلسہ سالانہ پر دور و نزدیک سے مہمانوں کی آمد

جوں جوں جلسہ قریب آیا مہمانوں کی تعداد بڑھنے لگی اور مساجد کی رونقیں بھی بڑھیں۔ برطانیہ کے مختلف ایئرپورٹس پر خدمت خلق کے کارکنان نے مہمانوں کانہ صرف استقبال کیا بلکہ جماعتی انتظام کے تحت ان مہمانو ں کو رہائش گاہوں تک پہنچایا۔ ایئرپورٹس پر جلسہ سالانہ کے Tables موجود تھے۔ جن پر جلسہ سالانہ کے بورڈ آویزاں تھے۔ بعض بچے گتوں پر جلسہ سالانہ کے بینرز اُٹھائے مہمانوں کو اپنی طرف کھینچنے میں مصروف تھے۔
یورپ سے مہمانوں کی اکثریت اپنی ذاتی گاڑیوں پر برطانیہ تشریف لائے۔ جرمنی سے مکرم عبداللہ واگس امیر جماعت احمدیہ جرمنی کی سرگردگی میں 5 سائیکل سواروں کا قافلہ تین دن میں 800 کلو میٹر کی مسافت طے کر کے حدیقتہ المہدی پہنچا۔ مکرم امیر صاحب گزشتہ کئی سالوں سے سائیکل پر سفر کرکے برطانیہ کے جلسہ میں شرکت فرماتے ہیں۔

خدمت گار مہمانوں کی آمد

بیرون ملک سے آنے والے مہمانوں میں سے ایک گروپ ان نوجوانوں کا ہے جو جرمنی، کینیڈا اور امریکہ سے سینکڑوں کی تعداد میں مہمانوں کی خدمت کے لئے تشریف لاتے ہیں۔ انہوں نے 15سے20دن قیام کرکے انتظامات میں حصہ لیا اور ایک ٹیم کے ذمہ وائنڈ اپ کا کام ہے۔

سٹرکوں پر جلسہ سالانہ یوکے کے سائین بورڈز

مغربی دنیا میں اپنی منزل تک بآسانی پہنچنے کے لئے Sat Nav استعمال ہوتا ہے۔ جس کی مدد سے ایسی سڑکوں سے گزر کر جن میں رش نہ ہو اور فاصلہ مختصر ہو انسان منزل مقصود تک پہنچتا ہے۔ جونہی حدیقۃ المہدی قریب آتا ہے تو چاروں جہات میں پھیلی سڑکوں کو جال پر ہر طرف پیلے رنگ کی لوہے کی پلیٹس پر ‘‘جلسہ گاہ’’ کے بورڈز آویزاں نظر آتے ہیں جو ایک طرف تو سمت درست کرتے ہیں اور دوسرا اس خوشی کا احساس ہونے لگتا ہے کہ ہم ایک ایسی مبارک جگہ پر پہنچنے والے ہیں جہاں ایک روحانی ماحول پیدا ہوگا جس کا آغاز آج سے 130 سال قبل سیدنا حضرت مسیح موعود ؑ نے قادیان سے کیا تھا۔

نماز تہجد اور درس

جلسہ ہائے سالانہ جماعت احمدیہ کا ایک یہ اہم روحانی اور تعلیمی فیچر رہا ہے کہ جلسہ کے دنوں میں نماز تہجد ادا ہو اور نماز فجر کی ادائیگی کے بعد مختصر سا درس القرآن یا درس الحدیث ہو۔ بچپن میں علی الصباح ربوہ میں ہم جب ڈیوٹیوں پر جایا کر تے تھے تو مہمان حضرات کو مسجد مبارک کی طرف تیز قدموں کے ساتھ جاتے دیکھتے۔ تا نماز تہجد میں شامل ہوکر اپنی روحانی پیاس کو بجھا سکیں۔ یہی چیز ہم قادیان میں ہر سال دیکھتے ہیں جہاں اسلا م احمدیت کی سر بلندی کے لئے اجتماعی دعائیں ہوتی ہیں۔ جلسہ سالانہ یوکے اب انٹرنیشنل حیثیت اختیار کرچکا ہے۔ جلسہ گاہ میں مختلف ممالک سے آئے ہزاروں مردوزن مارکیز اور خیموں میں رہائش اختیار کرتے ہیں۔ بعض صاحب حیثیت مہمان قریب قریب ہوٹلز میں کمرے بک(Book) کرواکر ٹھہرتے ہیں جو صبح نماز تہجد ادا کرنے جلسہ گاہ آتے ہیں۔
امسال جلسہ کے موقع پر درج ذیل احباب کو نماز تہجد کی امامت کروانے اور ذیل میں درج مبلغین کرام کو درس القرآن اور درس الحدیث دینے کی سعادت نصیب ہوئی۔
جمعرات یکم اگست کو نماز تہجد مکرم حافظ احتشام احمد نے پڑھائی اور درس مکرم مرزا نصیر احمد نے دیا۔
جمعہ 2 اگست کو نماز تہجد مکرم اخلاق احمد انجم نے پڑھائی اور در س مکرم وسیم احمد فضل نے دیا۔
ہفتہ 3 اگست کو نماز تہجد مکرم حافظ مظفر احمد نے پڑھائی اور درس مکرم محمد احمد خورشید نے دیا۔
اتوار 4 اگست کو نماز تہجد مکرم حافظ طیب احمد نے پڑھائی اور درس مکرم راجہ برہان احمد نے دیا۔
سوموار5 اگست کو نماز تہجد مکرم حافظ مشہود احمد نے پڑھائی اور درس کرم منصور احمد ضیاء نے دیا۔

مردانہ پنڈال کا اندرونی ماحول

مردانہ پنڈال میں جہاں مین اسٹیج ہوتا ہے وہاں اسٹیج کے بالکل ساتھ اسٹیج پاس والے معززین کی کرسیاں بھی ہوتی ہیں۔ اسٹیج کے دائیں طرف VIP اور تبشیر چیئرز لگائی جاتی ہیں۔ اسٹیج کے بالکل سامنے گرین ایریا ہوتا ہے جس کا پاس لینا ضروری ہے اور اسٹیج کے بائیں جانب Foreign guests کے لئے کرسیاں مخصوص گئی تھیں۔ درمیان میں ایک گیلری ہوتی ہے اور اس کے بعد نارمل چئیرز اور نیچے بیٹھنے والوں کے لئے جگہ مختص ہوتی ہے۔ چونکہ آجکل گرمیوں کا دور ہے اس لئے ایک نہایت عمدہ قسم کا اےسی بھی مردانہ و زنانہ پنڈال میں کام کر رہا ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ تمام پنڈال میں خلفاء کے الہامات یا نصائح پر مبنی بینرزبھی چسپاں ہوتے ہیں ۔

عالمی بیعت کی پر رونق اور بابرکت تقریب

جلسہ سالانہ برطانیہ کا ایک اہم حصہ عالمی بیعت ہے۔ جس میں دوران سال بیعت کرنے والے تو شامل ہوتے ہی ہیں۔ تمام دنیا کے احمدی مرد و خواتین تجدید بیعت کرتے ہیں اور اسلام احمدیت اور خلیفتہ المسیح کے ساتھ کامل وابستگی کا ازسر نو اظہار کرتے ہیں۔ چنانچہ امسال یہ تقریب مورخہ 4؍اگست 2019ء کو دوپہر 1بجے شیڈیولڈ تھی۔ چنانچہ دنیا بھر سے آئے نمائندوں کا پاس کے ذریعہ 12:35 پرگرین ایریا میں داخل کیا گیا۔ جہاں 5براعظموں کی مناسبت سے پانچ لائینیں تھیں۔ اور ٹکٹس پر نمبر درج تھے۔ بیعت کے لئے چوکی نما اسٹیچ سجایا گیا تھا۔ اس پر درج ذیل نمائندوں نے حضور انور کے مبارک ہاتھ پر ہاتھ رکھ کر اپنے اپنے براعظم اور ممالک کی نمائندگی کی۔ سیدنا حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ کے دست مبارک میں اپنا ہاتھ دے کر بیعت کرنے کا شرف درج ذیل نمائندگان کو حاصل ہوا۔
انڈیا سے مکرم شیراز احمد صاحب ایڈیشنل ناظر اعلیٰ برائے جنوبی ہند، پاکستان سے مکرم سید قاسم شاہ صاحب ناظر امور خارجہ و ناظرزراعت، افریقہ سے مکرم الحاج Alatoye Folrumso Azeez صاحب امیر جماعت نائجیریا، امریکہ سے مکرم ابوبکر صاحب صدر جماعت زائن امریکہ، یورپ سے مکرم یوسف Pander صاحب آئرلینڈ اور آسٹریلیا و جزائر ممالک سے مکرم Donner Herbing صاحب سیکرٹری تعلیم مارشل آئی لینڈ۔
جن کے کندھوں پر ہاتھ رکھ کر باقی 40ہزارکے قریب حاضرین نے ایک زنجیر بنا کر خلیفۃ المسیح سے براہ راست اپنا تعلق قائم کیا۔ اس سال 119 ممالک سے 300 قوموں کے 6 لاکھ 68ہزار 5سو 27 افراد نے جماعت احمدیہ میں شمولیت اختیار کی۔

چند اہم شعبہ جات کا تعارف

ویسے تو جلسہ سالانہ کے موقع پر بہت سارے شعبہ جات کام کر رہے ہوتے ہیں، جن تمام کا ذکر کرنا تو ممکن نہیں پر وہ شعبہ جات جو کہ جلسہ گاہ میں موجود ہیں اُن میں سے چند کا ذکر درج ذیل ہے۔

روزنامہ گلدستہ علم و ادب کا اسٹال و پرومو

جلسہ سالانہ کے موقع پر روزنامہ گلدستہ کا اسٹال بھی رکھا گیا۔ جس کو شاملین جلسہ نے نہایت سراہا۔ اس اسٹال کا مقصد احباب کرام کو روزنامہ گلدستہ کے متعلق آگاہی دینا اور مطلع کرنا تھا۔ تینوں ایام میں بڑی پلازما اسکرین پر پرومو چلتا رہااور اسٹال پر روزنامہ گلدستہ کے چند شائع ہو نے والے پرچے بھی رکھے گئے۔ اس سلسلہ میں مکرم لقمان کشور (انچارج کمیٹی گلدستہ یوکے) نے اپنے معاونین کے ساتھ نمایاں خدمات سر انجام دیں۔

خوش آمدید اور اسکیننگ مارکی

اس نظامت کا کام تمام آنے والے مہمانان گرامی کا گرم جوشی سے استقبال کرنا ہے اور ساتھ ہی ساتھ تمام مہمانوں کے Ids بھی چیک کرنا ہے اور سیکیو رٹی کو مد نظر رکھتے ہوئے ساتھ لائے ہوئے سامان کو بھی چیک کرنا ہے۔

وقف نو مرکزیہ

مکرم لقمان کشور انچارج وقف نو مرکزیہ نے رپورٹر گلدستہ کو بتایا کہ جلسہ سالانہ پر وقف نو کی مارکی کا سب سے بڑا مقصد واقفین میں شوق اجاگر کرنا ہے اور ان کو اپنے کیریئر میں فیلڈ کو پسند کرنے میں بھی مدد فراہم کرنا ہے۔ اس مارکی میں واقف نو کے جانے والے ٹرپس کی تصویری نمائش بھی پیش کی گئی تھی جو کہ اسپین، اسرائیل و فلسطین گیا تھا۔ تمام واقفین نے اس مارکی میں بہت دل جوئی کے ساتھ شمولیت اختیار کی اور اس کو پسند بھی کیا۔

القلم پراجیکٹ کی نمائش

یہ نمائش دلچسپی سے کم نہ تھی۔ یہ پراجیکٹ 2016 ء میں رضوان بیگ صاحب کیلی گرافر کی نگرانی میں شروع ہوا اور حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز نے اس کا Officially افتتاح فرمایا۔ اس کے تحت ہر ممبر جماعت کم ازکم ایک آیت اپنے ہاتھ سے تحریر کرتا ہے اور یوں 6000 سے زائد افراد کے ذریعہ ایک نسخہ قرآن کریم تیار ہوکر منصہ شہود پر آچکا ہے اور دوسرا قلمی نسخہ زیر تیاری ہے اور روزانہ ہی بے شمار لوگ یہاں آکر اس بابرکت پراجیکٹ کا حصہ بنتے ہیں۔

MTA Translations Unit

یہ والا یونٹ مردانہ و زنانہ پنڈال کے درمیان میں واقع ہے جہاں پر جلسہ کی مکمل کارروائی کے تراجم کا سلسلہ جاری رہتا ہے۔ مکرم احسن احمدی صاحب (ناظم ٹرانسلیشن) نے بتایا کہ دوران جلسہ ہونے والے تراجم میں مختلف زبانیں شامل ہیں۔
عربی، فرنچ، بنگلہ، انگلش، اردو، جرمن، ترکش، بوسنین، البانین، سواحیلی، انڈونیشین، ریشین، سپینش، افریقن انگلش، افریقن فرنچ۔
اس کے علاوہ یہ بات بھی قابل غور ہے کہ جاپان کے لئے ایک YouTubeچینل مختص ہے جو وہاں رہنے والوں کے لئے کافی آسانی پیدا کردیتا ہے۔ اس کے علاوہ لجنہ کے تمام سیشن کی بھی یہاں سے Live Translation ہو تی ہے۔

آب رسانی

دوران جلسہ آب رسانی کا شعبہ بھی نہایت خوش اسلوبی کے ساتھ خدمت کرتا ہے۔ چونکہ جلسے کے ایام میں گرمی کافی زیادہ تھی اسلئے اس شعبہ کا کام بہت بڑھ جاتا ہے۔ تمام جلسے کی کارروائی کے دوران چھوٹے چھوٹے بچے پانی کی بوتلیں اٹھائے جلسہ گاہ میں نظر آتے ہیں اور ثواب کما رہے ہوتے ہیں۔ مکرم طارق صفدر (ناظم آب رسانی) نے بتایا کہ ایک محتاط اندازے کے مطابق جلسہ کے تینوں ایام میں روزانہ کی بنیاد پر کم از کم 15تا17ہزار گلاس پانی پلایا جاتا ہے۔

مخزن تصاویر

مخزن تصاویر کے تحت دنیا بھر کے احمدیہ فنکشنز، تقاریب خلیفتہ المسیح کے دورہ جات، میٹنگز، جلسہ ہائے سالانہ، ذیلی تنظیموں کے اجتماعات، امن کانفر نسز، نیز دنیا بھر کے امراء و مبلغین کرام و دیگر عہدیدران کی جماعتی خدمات اور شہداء و اسیران راہ مولیٰ پر مشتمل تصاویر کے ریکارڈ کو مکرم عمیر علیم کی نگرانی میں اکٹھا کیا جاتا ہے۔ یہ شعبہ سیدنا حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ کے ایک خصوصی ارشاد پر اپریل 2006 ء میں ڈیئر پارک(Deer park) میں قائم ہوا۔ جہاں ایک خوبصورت و دلکش نمائش 12مہینے قائم رہتی ہے۔ ہر سال جلسہ سالانہ برطانیہ کے موقع پر ایک وسیع و عریض مارکی میں تمام فوٹوز کو نہایت خوبصورت ترتیب کے ساتھ آویزاں کیا جاتا ہے۔ جس کو ہزاروں شاملین جلسہ دیکھ کر اپنے ایمانوں کو تازہ کرتے ہیں۔ ہر تصویر کے ساتھ مختصر تعارف درج ہوتا ہےاور موقع پر بھی بعض خدام اس کے تعارف پر متعین تھے۔ نمائندہ گلدستہ کو انتظامیہ نے بتایا کہ اب تک ڈیڑھ لاکھ تصاویر ہمارے ریکارڈ میں محفوظ ہیں۔ اور اس شعبہ کی کارکردگی کو احمدی اور غیر احمدی دوست بہت سراہتے اور پسند کرتے ہیں۔ امسال یہ نمائش 9شعبہ جات میں تقسیم تھی۔
خواتین نے ہفتہ و اتوار کی سہ پہر کو یہ نمائش دیکھ کر اپنے ایمانوں میں اضافہ کیا۔ اس کے لئے خدمت خلق کے خدام نے مستورات کے لئے راستے بنا کر فوراً راستے صاف کئے۔

احمدیہ آر کائیوز اینڈ ریسرچ سنٹر

وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ احباب جماعت کے علم و عرفان میں اضافہ کی خاطر پرانے نوادرات اور تبرکات کو محفوظ کرنے کا سلسلسہ ربوہ میں بھی جاری ہے۔ برطانیہ میں بھی اس پر کام ہوتے دیکھ کر بہت خوشی ہوئی۔ جس کے تحت حضرت مسیح موعودؑ، خلفاء کرام اور بزرگان سلسلہ کے تبرکات محفوظ کرنے کے علاوہ دنیا بھر میں احمدیہ جماعت کا ریکارڈ، پرانی نادر کتب، خطوط، قدیم لٹریچر کو محفوط کیا جاتا ہے۔ حضرت مسیح موعود ؑ کے مبارک بال، تولیہ، کوٹ کا ٹکڑا۔ حضرت خلیفہ ثانی کے استعمال میں رہنے والا قرآن کریم، ان کے نوٹس اور پریس ریلیزز کو دیکھ کر طبیعت میں روحانی کیفیت پیدا ہوتی ہے۔ اس کے علاوہ حضرت مسیح موعود ؑ کے دور میں طبع ہونے والی کتب کو بھی محفوظ کیا گیا ہے۔ یہ اہم کام مکرم آصف باسط کی زیر نگرانی میں ہورہا ہے۔

چائے کا اسٹال

کئی چیزیں دنیاوی جلسوں پر نظر نہیں آتیں۔ وہاں لوگ پیسہ بنانے کی خاطر کئی اسٹال لگاتے ہیں۔ مگر اس مبارک بستی میں ایک ایسا اسٹال بھی تھا جہاں 24 گھنٹے مفت چائے ملتی رہی۔ مکرم ضیاءالحق (ناظم ٹی اسٹال) نے رپورٹر گلدستہ کو انٹرویو میں بتایا کہ ہفتہ اور اتوار کو 40-40 ہزار چائے کے کپ وغیرہ ہمارے اسٹال سے گئے ہیں۔ جمعہ کی تعداد اس کے علاوہ ہے۔ اسٹال کے انچارج نے بتایا کہ 30 لیٹر پانی میں 180 ٹی بیگز (PG چائے) اور 16 لیٹر دودھ ڈالا جاتا ہے۔ اور چائے کو ذائقہ دار بنانے کے لئے سبز الائچی اور دار چینی کا استعمال بھی ہوتا ہے اور صبح کے وقت گرما گرم اُبلے انڈے بھی مہمانوں کی خدمت میں پیش کئے جاتے ہیں۔
آجکل شوگر کے مریض چینی کے بغیر چائے استعمال کرتے ہیں۔ ایسے لوگوں کے الگ سے پوائنٹس موجود تھے۔ ایسے پوائنٹس پر اسکرین کی گولیاں بھی نظر آرہی ہوتی ہیں۔

پرچم کشائی

حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ نے مورخہ 2؍ اگست کو پہلے افتتاحی اجلاس سے قبل چبوترے پر تشریف لاکر لوائے احمدیت لہرایا۔ چبوترے کے جلو میں 143ممالک کے جھنڈے لہرا رہے تھے۔ مکرم عبد الباسط (ناظم خصوصی انتظامات) نے بتایا کہ یہ اُن ممالک کے جھنڈے ہیں جو اب تک جلسہ سالانہ برطانیہ میں کسی نہ کسی سال شامل ہوچکے ہیں اور ہر سال اس کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے۔ Flags Arena میں ان جھنڈوں سے خوبصورتی میں اضافہ ہوتا ہے۔ یہ جھنڈے جماعت کی ترقیات کی عکاسی کرتے ہیں۔ یہاں یہ بات قارئین کو بتانا بھی ضروری ہے کہ روزانہ غروب آفتاب پر لوائے احمدیت کو اتارنے کی تقریب بھی ہوتی ہے اور اگلے دن طلوع آفتاب پر دوبارہ پرچم کشائی کی جاتی ہے۔

تبشیر ڈنر

جلسہ سالانہ کا ایک اہم Event وکالت تبشیر کا ڈنر ہے۔ جس کے لئے تبشیر کی طرف مردوں اور عورتوں کو الگ سے پاسز جاری ہوتے ہیں جہاں دنیا بھر کی تمام قومیتوں کے لوگ اکھٹے بیٹھ کر حضور انور کی معیت میں کھانا تناول کرتے ہیں۔

تبلیغ مارکی

تبشیر مارکی کے ساتھ ایک اہم مارکی تبلیغ مارکی کہلاتی ہے۔ جس میں جماعت احمدیہ کی تبلیغی مصروفیات کا ذکر ہوتا ہے۔ مختلف مسائل، جماعتی ترقیات اور نومبائعین اپنے قبولیت احمدیت کے واقعات بیان کرتے ہیں۔ یہاں قرآن کریم کے اہم نسخوں کی نمائش بھی ہوتی ہے۔ نیز جن زبانوں میں جماعت قرآن کریم کے تراجم شائع کرچکی ہے وہ بطور نمائش پیش کئے گئے تھے۔ شعبہ تبلیغ کے زیر انتظام غیر از جماعت مہمانوں کے لئے جلسہ سالانہ میں علیحدہ انتظامات تھے۔ اس سلسلہ میں دو علیحدہ مارکیز لگائی گئی تھیں۔ ایک صرف عرب مہمانوں کے لئے مختص تھی جبکہ دوسری غیرعرب مہمانان کے لئے۔
جلسہ کے تینوں دن مہمانوں کوجلسہ پر لانے اور لے جانے کے انتظامات تھے۔ مکرم صداقت احمد مشہود جن کی ذمہ داری مہمانوں کی Transportationکی ڈیوٹی تھی۔ اپنے ساتھ جانے والے مہمانوں کے تاثرات کا ذکر کرتے ہوئے بتاتے ہیں کہ ایک ’’پاکستان سے آنے والے صاحب جنہوں نے ابھی حال ہی میں بیعت کی ہے لیکن اُن کی اہلیہ نے ابھی بیعت نہیں کی تھی۔ وہ بتاتی ہیں کہ جلسہ میں آکر انہیں جماعت جماعت کو قریب سے دیکھنے کا موقع ملا اور اب وہ اِس لحاظ سے مطمئن ہیں کہ اُن کے خاوند نے کوئی غلط قدم نہیں اُٹھایا بلکہ ایک درست جماعت کے ساتھ شامل ہوئے ہیں۔ نیز بیعت کرنے کے بعد جس طرح عام مسلمان رشتہ داروں میں اُن کی سخت مخالفت شروع ہوئی۔ احمدی احباب کے ساتھ مل کر اُنہیں کبھی اجنبیت کا احساس نہیں ہوا بلکہ ایک گھر کا سا ماحول ملا۔
مکرم صداقت صاحب ایک ترک نوجوان کے بارے میں بتاتے ہیں ’’جو قوت بینائی سے محروم ہیں اور یونیورسٹی آف ڈنڈی (اسکاٹ لینڈ) کے طالب علم ہیں۔ گزشتہ سال اپنے ایک پروفیسر کے ساتھ جلسہ میں شمولیت کی تھی۔ امسال بھی خاص طور پر دوبارہ شرکت کے لئے تشریف لائے اور انتہائی خوشی کا اظہار کیا۔ اپنے استاد کا ذکر کرتے ہوئے اُنہوں نے بتایا کہ گزشتہ سال واپس جاکر وہ کافی دن تک اپنے تجربات کے بارے میں لوگوں کو بتاتے رہے اور ادارہ ظاہر کرتے رہے کی جب بھی دوبارہ موقع ملا تو اپنے پورے خاندان کے ساتھ جلسہ میں شامل ہونگے اور اسلام کے صحیح تصور سے انہیں متعارف کرائیں گے۔
جلسہ میں غیر از جماعت مہمانوں کے لئے گائیڈ سائٹ ٹور کے بھی انتظام تھا جس میں گائیڈ کی رہنمائی میں نمائش کے اسٹالز اور جلسہ گاہ کا دورہ کرایا جاتا ہے۔

تبلیغی نشست

اس ضمن میں یہ بتانا بھی ضروری ہے کہ ہر سال جلسہ سے قبل جمعرات کو تبلیغی نشست منعقد ہوتی ہے۔ اس دفعہ یہ نشست حدیقۃ المہدی میں ہی منعقد ہوئی۔ اس میں بھی بیرون ملک سے آنے والے مہمان شامل ہوتے ہیں۔ اس دفعہ جلسہ کے موقع پر ایک یوکرانین جناب ایگر و متروک اور قزاقستان کے ایک مسٹر آزات نے بیعت کرکے جماعت احمدیہ میں شمولیت اختیار کی۔

جلسہ ریڈیو 87.7FM

آج سے قریباً 40سال قبل حضرت خلیفۃ المسیح الثالث رحمہ اللہ نے اس خواہش کا اظہار فرمایا تھا کہ کسی ایک ملک میں ایک احمدیہ مسلم ریڈیو ہونا چاہئے۔ یہ خواہش خلیفہ ثالث کے دور میں تو پوری نہ ہوسکی تاہم حضرت خلیفۃ المسیح الرابع رحمہ اللہ کے دور میں اللہ تعالیٰ نے ایم ٹی اے کی صورت میں ایک لازوال تحفہ جماعت کو عطا فرمایا۔ اس کے ساتھ افریقہ کے ممالک میں بیسیوں کی تعداد میں احمدیہ مسلم ریڈیو کے ذریعہ اسلام احمدیت کی تبلیغ اور قرآنی تعلیمات کا پرچار ہورہا ہے۔
اب کچھ سالوں سے جلسہ سالانہ کے موقع پر احمدیہ ریڈیو مکرم ڈاکٹر عبدالباری کی نگرانی میں کام کرتا ہے جو 87.7 FM پر جمعرات سے لے کر جلسہ کے تینوں ایام میں چلتا ہے۔ اس کی آواز قریباً 10میل تک سنی جاسکتی ہے اور اگر موسم صاف ہو تو یہ اور بھی زیادہ دور سے سنا جا سکتا ہے۔ جلسہ سالانہ پرآتے اور ڈیوٹی پر موجود کارکنان یہ ریڈیو بآسانی سن سکتے ہیں۔ جلسہ پر آتے جب رش کی وجہ لوگ راستہ میں پھنس جاتے ہیں تو اس ریڈیو کے ذریعہ وہ جلسہ کی کارروائی میں شامل ہوتے ہیں۔ اس ریڈیو میں شاملین جلسہ اپنے جذبات اور ایمان و عرفان کا ذکر کرکے لوگوں کے ایمان کو ابھارتے ہیں۔

Voice of Islam (DAB)

مکرم عطاء القدوس متین نے بتایا کہ Voice of Islam ریڈیو لائیو 24/7 نشر ہوتا ہے جس کا مقصد اسلام کی حقیقی تصویر پیش کرنا ہے۔ اللہ کے فضل سے اب اسکی IOS اور Android ایپ بھی لانچ ہوچکی ہے۔ اس دفعہ جلسہ سالانہ کے موقع پر Bumper Sticker کا بھی اجراء کیا جس کے نکلنے کی صورت میں شاملین انعامات کے حقدار ہوں گے۔ اسکے علاوہ VOI نے اپنے اسٹال پر ہیڈ فونز، مگس، پین وغیرہ بھی برائے فروخت رکھے تھے جن سے حاصل ہونے والی رقم اس شعبہ کی مزید ترقی کے لئے استعمال ہوگی۔

بُک اسٹال

دنیا بھر میں منعقد ہونے والے جلسوں کی ایک خوبصورتی بک اسٹالز ہیں۔ جہاں مختلف زبانوں میں شائع ہونے والے لٹریچر بغرض فروخت موجود ہوتا ہے۔ اس دفعہ جلسہ سالانہ برطانیہ کے موقع پر ایک وسیع مارکی بک اسٹال کے لئے Alot تھی۔ جس میں عربی، انگریزی، اردو، فرنچ، زبانوں میں شائع ہونے والی کتب کے الگ الگ ڈیسک تھے۔
امسال نئی یا Reprint ہونے والی کتب میں سے چند کے نام درج ذیل ہیں۔
سیرۃ النبی،سیر روحانی۔ اردو عربی ،فقہ المسیح ۔عربی،حدیقۃ الصالحین
Invitation to Ahmadiyyat Through Force or Faith
رجل اللہ وغیرہ

نظامت فائر اینڈ سیفٹی

نظامت فائر اینڈ سیفٹی جلسہ سالانہ میں ایک اہم نظامت ہے کیونکہ یوکے میں قوانین کے مطابق کسی بھی عوامی اجتماع کی جگہ پر حفاظتی انتظامات خاص طور پر آگ سے بچاؤ کے لئے انتظامات ہونا بہت ضروری ہے۔ اس ضمن میں نظامت کے زیر انتظام جلسہ کی تیاریوں کے ساتھ ہی کام شروع ہوجاتا ہے۔ ابتداء میں تمام سائٹ کا جائزہ لے کر پلان کی نشاندہی کی جاتی ہے۔ اور اس کے مطابق حفاظتی انتظام کیا جاتا ہے۔ جلسہ سالانہ کے دوران ہر ضروری جگہ پر آگ بجھا نے کے مناسب آلات اور فائر الارم کی تنصیب کی جاتی ہے۔ اِس کے علاوہ جلسہ کے دوران کسی بھی ہنگامی صورت حال کے لئے مستعد ٹیم 24 گھنٹے تیار رہتی ہے اور وقتاً فوقتاً تمام سائٹ کا حفاظتی نقطہ نظر سے جائزہ بھی لیا جاتا رہتا ہے۔

فرسٹ ایڈ

جلسہ سالانہ کے موقع پر بہت اہم کام صحیح موقع پر طبی امداد کی فراہمی ہے۔ چنانچہ امسال بھی اس شعبے نے اپنی ذمہ داریوں کو خوب سے نبھایا اور روزانہ کی بنیاد پر 2000سے 3000تک پریضوں کو مفت ادویات دی جاتی رہیں۔
اس کے علاوہ چند اور شعبہ جات جو جلسہ گاہ میں خدمات سرانجام دے رہے ہیں وہ مندرجہ ذیل ہیں۔دفتر پی ایس، تبشیر، وکالت مال ،AMJ ،MTA Studios ،رابطہ آفس، یوکے پریس ،Review of Religion ، رشتہ ناطہ، KeK ڈائیننگ، امانت، خدمت خلق، گمشدہ پراپرٹی، انسپکشن آفس، سنٹرل فنانس وغیرہ

کار پارکنگ اور شٹل سروس

جلسہ گاہ میں کار پارکنگ کے لئے 65صد سے زائد گاڑیاں پارک ہوتی ہیں۔ اس کے علاوہ ہر سال جلسہ گاہ سے ملحقہ 3 میل فاصلہ پر کنٹری مارکیٹ (Country Market) میں ایسے دوست گاڑیاں پارک کرتے ہیں جن کو پاسز جاری نہیں ہوتے۔ یہاں بھی ہزاروں کی تعداد میں کاریں کھڑی ہوتی ہیں۔ جہاں سے شٹل سروس کے ذریعہ احباب و خواتین کو جلسہ گاہ پہنچا یا جاتا ہے۔ اسکے علاوہ ہزاروں کی تعداد میں دوست بسوں یا ٹرینوں کے ذریعہ جلسہ گاہ پہنچتے رہے۔

معزز مہمانوں کے خطابات

جلسہ کے ایام میں سیکرٹری امور خارجہ خاص طور پر معزز مہمانوں کو مدعو کرتے ہیں تاکہ تبلیغ کا ذریعہ بھی بن سکے اور ساتھ ہی ساتھ اُن کو اسلام احمدیت کی اصل تعلیم کا بھی علم ہو سکے۔ دوران جلسہ اپنے جذبات کا اظہار کرنے والے معزز مہمان میں سے قارئین کے لئے چند نام درج ذیل ہیں۔
Councillor Mary Foryszewski, Mayor of Waverley
Rabbi Gabriel Negrin, Chief Rabbi in Greece
Mervyn Thomas, Chairman
Iliana Calles, Member of Parliament in Guatemala
Dr Rami Ranger CBE, Chairman Sikh Nation Association UK
Virendra Sharma MP
Cooper W Kruah Sr, Minister of Post and Telecommunications in Liberia
Simeon Swadogo, Minister of State-Burkina Faso
Damian Hinds, MP
Sir Ed Davey , MP
Lord Ahmad, Lord

چند شاملین جلسہ کے تاثرات

مکرم Addoulie Gassama گیمبیا سے کہتے ہیں ۔
This is my third Jalsa, Well, Jalsa teaches the whole world about world peace. It manifest the true teachings of Islam”.
Mr. Aaciej Chmielewski Icelend سے کہتے ہیں۔
“This is first Jalsa, Its interesting, collectively gathered and able to unite other cultures and accommodating. This is my second day and I am finding it Interesting”.
مکرم محمد اکبر۔
جو ابھی کچھ عرصہ پہلے ہی پاکستان سے آئے ہیں، کہتے ہیں کہ جو کمی ہمیں پاکستان میں محسوس ہوتی ہے وہ جلسہ سالانہ میں شمولیت کے بعد کافی حد تک دور ہوئی۔ اپنا ذاتی انتظام ہونے کے باوجود ہم نے یہاں جلسہ گاہ میں رہائش کو ترجیح دی۔ اللہ سب کے ساتھ ہو۔
مکرم طاہر محمود احمد۔ نظارت اشاعت ربوہ
خدا تعالیٰ کا بے حدوحساب فضل و احسان ہے کہ جس نے جلسہ میں شامل ہونے کی توفیق دی۔ سُنی سنائی باتیں اور ہوتی ہیں اور اپنی آنکھوں سے دیکھنے کی باتیں اور کیفییات اور ہوتی ہیں۔ جب سے خاکسار جلسہ کے سلسلہ میں لندن آیا ہے۔ مختلف پروگرام میں شامل ہوا ہے۔ حضور انور کا دیدار ہوا ہے۔ نمازیں حضور انور کی امامت میں ادا کی ہیں تو یہ ایک سہانا خواب لگا جس کا سرور خاکسار کے انگ انگ میں سرایت کر گیا ہے۔ صبح و شام شراب طہور کے خُم کے خُم پی رہا ہوں۔ بہار جا وداں کے جھونکے مسسل سرور بخش رہے ہیں۔ پُر مسرت لمحات میرے سینے میں گل و گلزار پیدا کررہے ہیں۔ یہ رنگ و نسل کے پروانے شمع کے فرد گھوم رہے ہیں۔ محبت و الفت کے بادل چھائے ہوئے ہیں۔ بھائی چارہ اور امن و آشتی کا ماحول ہے۔ اللہ تعالیٰ یہ باتیں ساری دنیا میں پیدا کردے۔ آمین
کافور ہو رہے ہیں پیا سے دلوں کے غم چھلکے ہیں ایسے جام شراب طہور کے
طاہر یہ انجمن یوں سجتی رہے مدام قائم رہے سدا یہ خلافت خدا کرے

الوداع جلسہ الوداع

حضور انور کے اختتامی خطاب، اجتماعی دعا اور مختلف نظموں کے بعد حاضرین کے چہروں پر خوشی اور غمی کے آثار نمایاں تھے۔ خوشی اس لئے کہ اللہ تعالیٰ کے فضل سے جلسہ ہر لحاظ سے کامیاب ٹھہرا اور اداسی اس لئے تھی کہ یہ روحانیت بھرے تین دن گزر گئے اور آئندہ سال اس میں شمولیت کی توفیق ملے گی یا نہیں۔
ایک چیز جس نے مجھے بطور رپورٹر بہت متاثر کیا وہ مختلف چھوٹے چھوٹے بینرز تھے جو بچوں نے اٹھا رکھے تھے جن پر لکھا تھا ’’جلسہ سالانہ مبارک ہو‘‘۔ ’’خدا حافظ‘‘۔ “See You Again”۔ اور کارپارکنگ میں بڑے بڑے سائن بورڈ پر تحریر تھا Take a Jalsa Spirirt With You at Your Homes ۔ انتظامیہ بچوں میں ٹافیاں، چاکلیٹ اور پاستا تقسیم کر رہی تھی۔ یہ تمام نظارہ دیکھ کر مجھے ہوائی جہاز کا سفر یاد آگیا جب جہاز کو چھوڑتے ہوئے جہاز کی انتظامیہ خدا حافظ، Thank You، See You Again مسافروں کو کہہ رہی ہوتی ہے۔ دراصل جلسہ سالانہ بھی ایک روحانی پرواز ہے جس کے اختتام پر انتظامیہ آپ کے اچھے خیالات و جذبات کا اظہار کرتی ہے اور اگلی روحانی منزل کے متعلق نیک خواہشات کا اظہار کرتی ہے۔

اللہ تعالیٰ اس جلسہ کے روحانی فیض سے ہر ایک کو فائدہ اٹھانے کی توفیق سعید عطا فرمائے۔ اور کارکنان کو اجر عظیم سے نوازے۔ آمین

image_printپرنٹ کریں