skip to Main Content
قدسیہ محمود سردار :جلسہ سالانہ 2018ء۔برطانیہ کی چند خوبصورت یادیں

خدا تعالیٰ کے جماعت احمدیہ پر خاص احسانات ہیں۔ کبھی سالانہ جلسہ جات کی بہاریں تو کہیں اجتماعات، اجلاسات کی رونقیں ہیں MTA اس کا روحانی مائدہ کوگھروں میں صبح و شام تقسیم کر رہا ہے۔ ان سب نے مل کر جماعت کو ایک خوبصورت لڑی میں پرویا ہوا ہے۔
محبتوں کے قافلوں کا سفر سالانہ جلسہ جات کی صورت میں اب پھر سے شروع ہے ۔ ان دنوں نے مجھے جلسہ سالانہ UK 2018کی یاد دلادی۔ اللہ تعالیٰ کے فضل سے مجھے اس جلسہ میں شامل ہونے کی توفیق ملی ۔ میرے لئے یہ ایک غیر معمولی اور کبھی نہ بھولنے والا تجربہ تھا۔ شکرِ خدا وندی، ایمان، یقین و معرفت، جوش و جذبہ اورفیض آسمانی کی فضا سے معمور یہ دن گویا خدا تعالیٰ کا ایک حسین معجزہ تھے۔ یہ تین دن دعاؤں ، ذکر الٰہی اور روحانی سرور کی ایسی دنیامیں لے جاتے ہیں۔جہاں دنیا کے غم و فکر کہیں دور پیچھے رہ جاتے ہیں۔ جماعت احمدیہ برطانیہ کا 52 واں جلسہ سالانہ 3-4-5 ۔اگست 2018 ء کو حدیقۃ المہدی (ہمپشائر) میں منعقد ہوا۔ جلسہ کے نظارے دیکھ کر مجھے خوبصورت رنگا رنگ ‘‘رِلیّ’’ (سندھیPatch work quilt ) ‘‘جو مختلف رنگوں کی کترنوں کو جوڑ جوڑ کر بنائی جاتی ہے’’ یاد آگئی! اسی طرح اس جلسہ میں پوری دنیا سے مختلف قومیتوں ملکوں، رنگ نسل، عمر اور طبقہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگ شامل تھے مگر ان کے دل آپس میں اسی رِلیّ کی مانند اسلامی اخوت، محبت و یگانگت سے جڑے ہوئے تھے۔ اس جلسہ میں 115 ممالک سے 38 ہزار 510 افراد نے شرکت کی۔
سیدنا حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز کے پر معارف، پر اثر خطاب:
یہ جماعت احمدیہ برطانیہ کی بڑی خوش نصیبی ہے کہ خلافت احمدیہ کے ادھر قیام کی بدولت ا س جلسہ کو ایک مرکزی جلسہ ہونے کے ساتھ ساتھ ایک عالمی جلسہ ہونے کی بھی سعادت حاصل ہے۔ تقدس ماب حضرت امیرالمومنین خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصر ہ العزیز کی بابرکت شرکت کی وجہ سے اس جلسہ کی اہمیت سب جلسوں سے بڑھ کر ہے حضور انورایدہ اللہ تعالیٰ نے اس جلسہ میں چار بصیرت افروزاور زندگی بخش خطاب فرمائے۔ جو روحانی اور دینی تعلیمات سے لبریز تھے۔ ان خطابات میں آپ نے جماعت کو تقویٰ ، روحانیت، عبادات، پاکیزگی، نیک رویے، دعاؤں، تربیت اولاد، خدمت خلق،اچھے اخلاق کی طرف خاص توجہ دلائی۔ آپ کا 4 -اگست کو لجنہ سے خطاب تربیتِ اولاد کے حوالے سے درپیش تمام مسائل کا حل اپنے اندر لئے ہوئے تھا۔ اس میں آپ نے نئی نسل کو بڑی اہم نصیحت فرمائی کہ ’’وہ ایک گھنٹہ سے زیادہ سیل فون اور آئی پیڈ استعمال نہ کریں ‘‘یہ ایک ایسا مسئلہ ہے جو اس وقت پوری دنیا کے لئے دردِ سر بنا ہوا ہے مگر ہمارے پیارے امام ایدہ اللہ تعالیٰ نے اس سے محفوظ رہنے کے سارے طریق ہمیں اس خطاب میں بتا دیئے ہیں۔
حضور انورایدہ اللہ تعالیٰ نے 29 جولائی 2018 بروز اتوار کو جلسہ سالانہ کی ڈیوٹیوں کا معائنہ فرمایا۔ خدا تعالیٰ کے فضل سے جلسہ کے سارے انتظامات بہت مکمل اور اعلیٰ تھے برطانیہ جماعت نے اسلامی روایات کے مطابق بڑی محنت، محبت، عزت کے ساتھ حضرت مسیح موعود علیہ السلام کے مہمانوں کی خدمت کی۔ موسم کی شدت کے باوجود احمدی رضا کاران دن رات کام کرتے تھے۔ چند دِنوں کے لئے کھلے میدان میں ہزاروں افراد کے لئے ہر طرح کی سہولیات سے آراستہ ایک شہر آباد کرنا خدا تعالیٰ کا ایک خوبصورت نشان ہے۔ اور خدائی جماعت کی صداقت کا بھی ایک ثبوت ہے۔ جب میں جلسہ گاہ کے قریب پہنچتی تھی تو مجھے لگتا تھا کہ میں جنگل میں وادیوں کے بیچ ایک دریا بہتا دیکھ رہی ہوں۔ جس کی لہریں محبت و ایثار، قربانی، بے نفسی، خدمت انسانیت، خدمت خلق، خدمت اسلام کی چمک سے روشن ہیں اور جس کا ایک ایک منظر دل کو خوشی اور سکون فراہم کرتا ہے ۔ اللہ تعالیٰ سب کا رکنان، رضا کاران، انتظامیہ کو بہترین جزائے خیر عطا فرمائے۔ آمین
5اگست2018ء کو اتوار کے روز نماز ظہر سے قبل عالمی بیعت کی تقریب ہوئی جس میں ادھر موجود تمام افراد نے اور ایم ٹی اے کی برکت سے دنیا بھر کے احمدیوں نے اس میں شمولیت کی۔ اور اپنے پیارےامام ایدہ اللہ تعالیٰ کے ساتھ مل کر بیعت کے الفاظ دہرائے۔ آخر میں سجدہ شکر ادا کیا۔اس سال 6 لاکھ 47 ہزار سے زائد افراد بیعت کرکے جماعت احمدیہ میں شامل ہوئے۔ یہ بھی ایک ایمان افروز تجربہ ٹھہرا۔
جلسہ کے ان تین دنوں میں آپ وفا، اخلاص، محبت و اخوت، احسان و اپنائیت، شوق و جذبہ کے سارے رنگ نظر آئے۔ حضرت مسیح پاک علیہ السلام کے ان ارشادات مبارکہ کی بھی تکمیل ہوتی ہے کہ آپ جلسہ سالانہ پر اس لئے آرہے کہ ‘‘طلبِ علم اور مشورہ امدادِ اسلام اور ملاقاتِ اخوان کے مواقع مہیا ہوں۔’’
اور ‘‘تما م بھائیوں کو روحانی طور پر ایک کرنے کے لئے اور خشکی اور نفاق اور اجنبیت کو درمیان سے اٹھا دینے کے لئے بدرگاہ رب العزت کوشش کی جائے۔ ’’
(مجموعہ اشتہارات جلد اول)
خدا تعالیٰ کے فضلوں اور انعاموں کا سامان لئے اس جلسہ کو غیروں نے بھی بڑی پذیرائی بخشی۔مختلف ممالک سے آئے معزز مہمانوں نے بھی اس جلسہ میں جماعت کی امن پسندی، محبت و اخوت کی تعلیمات اور خدمت انسانیت اور جماعتی ترقیات کو سراہا۔
میرا جلسہ سالانہ برطانیہ میں شامل ہونے کا یہ پہلا موقعہ تھا۔ مجھے جماعت کی ترقیات کو قریب سے دیکھنے کا موقع ملا۔
میں نے جلسہ کے انتظامات ہوں یا واقفین دین کا معیار زندگی ہو یا اشاعت دین و خدمتِ انسانیت کا میدان ہو یا جماعت کی تعلیم و تربیت کا معاملہ ہو! ہر شعبہ میں ان کا معیار بلندی پر دیکھا۔
‘‘یہ خدا تعالیٰ کے فضل سے الٰہی مدد و نصرت سے تائید یا فتہ پیارے امام حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز کی شب و روز محنت، راہنمائی اور دعاؤں کی بدولت ہے۔’’
’’پھر ہماری بھی یہ ذمہ داری ہے کہ بحیثیت افراد جماعت ہم بھی آپ سے اپنی اطاعت کے معیار اسی بلندی تک لے جائیں۔‘‘
نہ صرف جلسہ کے دن بلکہ سال کے 365 دن اپنی عبادات، نیکی، دعاؤں کے معیار بلند سے بلندکرتے چلے جائیں۔ اللہ تعالی تمام جماعت کو حضرت مسیح موعود علیہ السلام کی ان تمام دعاؤں کا وارث بنائے جو آپ نے شاملین جلسہ کے لئے کیں ۔ آمین

image_printپرنٹ کریں