skip to Main Content
سیدنا حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ کےدوسرے روز کےخطاب کا خلاصہ 3اگست 2019ء

خداتعالیٰ کے فضل سے دنیا کے 213 ممالک میں احمدیت کا پودا لگ چکا ہے
849نئی جماعتیں، 355مساجد کی تعمیر، 180 مشن ہاؤسز اور 1499نئے مقامات پر پہلی بار احمدیت کا نفوذ
5545 نمائشوں کے ذریعہ20لاکھ افراد اور بک سٹالز میں شرکت کے ذریعہ 22لاکھ 4 ہزار سے زائد افراد تک جماعت کا پیغام پہنچا
119 ممالک کی 303 اقوام کے 6لاکھ 68 ہزار 527 افراد کا قبول احمدیت
91 ممالک میں 48 ہزار 470وقارعمل کے ذریعہ 52لاکھ ڈالرز کی بچت

سیدنا حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصر ہ العزیز نے53ویں جلسہ سالانہ برطانیہ کے دوسرے دن مورخہ 4؍اگست 2019ء کو جلسہ گاہ تشریف لائے تو جلسہ گاہ نعروں سے گونج اٹھا۔ اجلاس کا باقاعدہ آغاز تلاوت قرآن کریم سے ہوا۔ مکرم محمود وردی  نے سورۃ الصف کی آیات 8تا12 کی تلاوت اور اردو ترجمہ پیش کیا۔ اس کے بعد مکرم ناصر علی عثمان  نے حضرت مسیح موعودؑ کا پاکیزہ منظوم کلام “اے خدا اے کارساز و عیب پوش و کردگار” ترنم سے سنایا۔ ازاں بعد حضور انور نے خطاب فرمایا آپ نے اپنے خطاب میں جماعت احمدیہ پر اللہ تعالیٰ کے فضلوں کی بارش اور تائید الٰہی کے نظاروں کا ذکر فرمایا اور اجمالا” جماعتی ترقیات اور انعامات الٰہی بیان فرمائے۔ حضور انور نے جماعت کے مختلف شعبہ جات کے تحت ان کی کارکردگی اور اعدادوشمار پیش فرمائے اور ساتھ ساتھ غیروں کے تاثرات اور بہت ہی ایمان افروز واقعات سے اس پُرمعارف اور مؤثر خطاب کو مزین کیا۔ دیئے۔ اس رپورٹ میں مختلف شعبہ جات کی کارکردگی اور اعدادوشمار شامل ہیں۔
تشہد، تعوذ اور سورۃ فاتحہ کی تلاوت کے بعد حضور انور نے خطاب کے آغاز میں فرمایا: اس وقت میں دورانِ سال اللہ تعالیٰ جو افضال جماعت احمدیہ پر ہوئے ہیں ان کا ذکر کروں گا، خداتعالیٰ کے فضل سے اس وقت تک دنیا کے 213 ممالک میں احمدیت کا پودا لگ چکا ہے اور اللہ تعالیٰ کے فضل سے گزشتہ 35 سالوں میں 1984ء سے لے کر اب تک 118 ممالک اللہ تعالیٰ نے احمدیت کو عطا فرمائے ہیں۔

نئے ملک کا اضافہ

اس سال نئے ملک آرمنییا میں جماعت کا پودا لگا ہے۔ چھوٹا سا ملک ہے ۔ 29ہزار مربع کلو میٹر رقبہ اور 36 لاکھ کی آبادی ہے۔ یہاں رومن کیھتولک لوگ ہیں۔ یہاں کے عیسائی اس بات پر بہت فخر کرتے ہیں کہ وہ عیسائیت کو سب سے پہلے قبول کرنے والے ہیں۔ یہاں عیسائیت کے تاریخی مقام بھی موجود ہیں۔ یہاں پہلے جرمنی سے 2008 ء اور 2009ء میں تبلیغی دورہ کیا گیا اس سال فروری سےجورجیا میں وہاں مبلغ گئے۔ اس سال جولائی میں آرمینین دوست نے وہاں رابطے کئے اور ایک نو مسلم پہلے سے تبلیغی رابطہ میں تھے۔ پھر انہوں نے خدا تعالیٰ سے راہنمائی مانگی۔ انہوں نے تسلی ہونے کے بعد بیعت کر لی۔

نئی جماعتیں

اللہ تعالیٰ کے فضل سے اس سال دنیا بھر میں 849 نئی جماعتیں قائم ہوئیں۔ نئی جماعتوں کے علاوہ 1499 نئے مقامات پر پہلی بار احمدیت کا پودا لگا۔ نئے مقامات پر جماعت کے نفوذ اور قیام میں گھانا پہلے نمبر پر 171 نئی جماعتیں پھر نائیجر 102 ، ایوری کوسٹ 83 جماعتیں پھر بینن میں78اور سیرالیون میں بھی 78 نئی جماعتیں قائم ہوئی ہیں۔
نئی جماعتوں کے قیام کے واقعات بہت سارے ہیں۔ ایک دو بیان کرتا ہوں لائبیریا سے مبلغ لکھتے ہیں کہ موونٹ کاؤنٹی کے دورہ کے دوران ایک گاؤں میں پہنچے وہاں جماعت کا تعارف کروایا۔ غرض و غایت بتائی۔ لیکن گاؤں کے لوگوں نے عدم دلچسپی دکھائی۔ دعا کی۔ اگلے دن اس گاؤں کا امام ہمارے سنٹر آیا اور کہا میں آپ کو ساتھ لے جانے کیلئے آیا ہوں۔ پوچھا کیوں ؟ تو بتایا کہ وہاں جا کر بتاؤں گا۔ گاؤں گئے تو وہاں لوگ پہلے سے جمع تھے۔ بتایا کہ کل جو آپ لوگ تبلیغ کیلئے آئے تھے ایک عمر رسیدہ خاتون موجود نہ تھیں وہ آج صبح واپس آئی تھیں۔ پوچھا کہ کیا کل کو ئی اجنبی لوگ آئے تھے؟ میں نے بتایا کہ احمدی لوگ آئے تھے۔ اس خاتون نے بتایا کہ خواب میں دیکھا کہ گاؤں میں دو اجنبی ہیں ان کا ارادہ تھا مسجد پر جھنڈا لگائیں اور خواب میں بتایا گیا تھا وہ جھنڈا اسلام کا جھنڈا ہے۔ اس لئے اب گاؤں والوں نے فیصلہ کیا ہے کہ ہم جماعت احمدیہ میں شامل ہونا چاہتے ہیں۔وہاں 157 مرد و زن بیعت کر کے جماعت میں شامل ہوئے۔
اسی طرح بینن سے مبلغ لکھتے ہیں کہ ایک دوست نے جماعت کے جلسہ سالانہ کے بارے میں سنا اور وہاں جانے کا ارادہ کیا اور غیر احمدی امام نے ان کو کہا تم مسلمان نہ رہو گے۔ اس نے ارادہ بدل دیا۔ چند دن بعد انہوں نے ایک احمدی سے کہا تم اسلام سے دور ہو اور مسلمانوں کو گمراہ کرتے ہو۔ مشنری نے کہا جلسہ میں شامل ہو کر خود دیکھ لو۔ اگر تم کوئی بھی غیر اسلامی چیز دیکھو توسفر کے اخراجات ہم ادا کر دینگے۔ وہ جلسہ پر ساتھ گئے اور جلسہ کے ماحول سے متاثر ہوئے لیکن احمدیت قبول نہ کی۔ کہا ایک بات ہے میری سمجھ میں نہیں آئی وہ امام سے پوچھوں گا۔ وہ غیر احمدی کے پاس گیا اور پوچھا کوئی ایسی نماز بھی ہے جو فجر سے پہلے پڑھی جاتی ہے۔ اس نے تہجد کی فضیلت پر ایک لمبی تقریر کر دی۔ جب وہ بات ختم کر چکا تو انہوں نے کہا میں نےاحمدیوں کے جلسہ میں ایک بھی غیر اسلامی بات نہیں دیکھی۔ مختلف نسلوں میں جو باہمی محبت دیکھی وہ بیان سے باہر ہے اور نئی چیز تہجد تھی۔ یہاں 255 بیعتیں ہوئیں اور غیر احمدیوں کی مسجد بھی جماعت کو مل گئی۔

بیوت الذکر

نئی مساجد کی تعمیر اور تعمیرشدہ عطا ہونے والی مساجد کل 355 ہیں۔ جن میں سے 139نئی مساجد ہیں اور 216 بنی بنائی عطا ہوئی ہیں۔کینیڈا ،امریکہ ،یوکے ، جرمنی اور ہندوستان میں مساجد کا اضافہ ہوا۔مساجد کے تعلق میں ایک گاؤں میں مارچ میں مسجد کی تعمیر شروع ہوئی جہاں احباب نے بڑی محبت سے مسجد کی تعمیر میں ہر کام میں حصہ لیا۔ دور پہاڑ سے بنیادوں کےلئے پتھر لائے اور پھر مٹی بھی خود لائے مردوں اور عورتوں نے کوئی تھکان کا اظہار نہ کیا۔ اس گاؤں والوں کا ایک خواب تھا کہ مسجد تعمیر ہو۔ ابتداء میں بڑی مشکلات آئیں ان تمام مشکلات سے گزرتے ہوئے اب تعمیر مکمل ہو گئی۔ اس دوران 15 نئی بیعتیں ملیں۔
مساجد کی تعمیر کے دوارن مخالفت کا سامنا ہوتا ہے پھر تائید الہی بھی ہوتی ہے۔ مالی کے امیر صاحب بیان کرتے ہیں کہ مالی ریجن میں اللہ کے فضل سے ریجنل مسجد تعمیر ہوئی۔ اس علاقہ میں کئی بار مسجد کی تعمیر کا ارادہ ہوا جلوس نکال کر مسجد کی تعمیر روک دی۔ ایک بار مسجد کی دیواریں بھی گرا دیں۔ پھر میئر علاقہ بدل گیا۔ اس میئر نے جماعت کو پانچ ایکڑ جگہ دی اور مشرک ہونے کے باوجود مسجد کی اجازت دی۔ متعدد دفعہ لوگ کہتے رہے کہ احمدیوں کو مسجد تعمیر کرنے سے روک دے۔ فون بھی کئے لوگوں نے پیسوں کا لالچ بھی دیا لیکن میئر نے کہا میں احمدیوں کے ساتھ ہوں اور اس مسجد کی ایک اینٹ بھی نہیں گرا سکتا۔ پھر ناکامی کے بعد اپنے زعم میں جادو ٹونا کیا۔ مسجد میں چیزیں پھینکتے رہے۔ اللہ تعالیٰ نے ہر موقع پر جماعت کی مدد فرمائی اور وہاں ایک عالیشان مسجد تعمیر ہوئی۔

مشن ہاؤسز

مشن ہاؤسز اور تبلیغی مراکز میں دوران سال 349 کا اضافہ ہوا۔ تبلیغی مراکز کےقیام کے حوالہ سے پہلے نمبر پر نائیجیریا 115،دوسرے پرانڈونیشا 63 ،تیسرے پر غانا 37 اور پھر انڈیا میں 32 تبلیغی مراکز قائم ہوئے۔

وقارعمل

وقار عمل بھی جماعت کا ایک خصوصی امتیاز ہے۔ اس سال 51 ممالک سے موصولہ رپورٹس کے مطابق 48 ہزار470 وقار عمل ہوئے جن کے ذریعہ ساڑھے 52 لاکھ ڈالرز کی بچت ہوئی۔

پریس

رقیم پریس یوکے اور افریقہ سےاس سال 3 لاکھ 31 ہزار 810 کتب چھپیں۔ رسالہ موازانہ مذاہب وغیرہ بھی چھپتے۔ اس وقت رقیم پریس انگلستان کی نگرانی میں 9 پریس افریقہ میں کام کر رہے ہیں۔ ان کو بھی یہاں سے ضرورت کے مطابق مدد دی جاتی رہی۔ افریقہ میں چھپنے والی کتب کی تعداد 4 لاکھ 44 ہزار 340 ہے۔ لیف لٹ وغیرہ الگ ہیں جن کی تعداد 58 لاکھ سے زائد ہے۔ جرمنی کے دو مخلص احباب نے 6 جدید مشینیں بھجوائی ہیں۔ اور عمدہ کوالٹی کی طباعت کی وجہ سے وہاں سے کام ہو رہا ہے۔
قران کریم کا سادہ ایک فونٹ تیار کروا کر اب کمپیوٹرائز ڈ ایڈیشن انڈیا سے تیار کروایا گیا ہے ۔یہ انڈیا سے چھپا ہے یہاں بھی چھپ رہا ہے عمدہ قسم کی جلد اور جدید قسم کے ڈیزائن کے ساتھ شائع ہوگا۔ 5والیوم(Volume) کمنٹری بھی نئے سرے سے ٹائپ سیٹنگ کر کے تیار کروایا گیا ہے۔ یہ بھی بک سٹال پر مل سکتی ہے۔ حضرت مسیح موعود ؑ کی کتب کے تراجم کے حوالہ سےتذکرہ انگریزی کا تیسرا ایڈیشن شائع ہوا ہے۔ ملفوظات جلد 2 کا انگریری ترجمہ چھپا ہے۔ میری تقریروں کے تراجم شائع ہوئے۔اردو اور انگریزی زبان کی کتب ری پرنٹ کیلئے شعبہ جات کو دی گئیں۔ برکات الدعا، مجموعہ اشتہارات ،سیر روحانی ،سیرت النبی، انوار خلافت، قضائی فیصلے یہاں سے چھپے ہیں۔ فارسی میں بھی کتب شائع ہوئیں۔
ارجنٹائن کے مبلغ لکھتے ہیں اس سال ارجنٹائن میں بک فیئر کے دوران ایک صاحب آئے۔ جماعت کے سٹینڈ سے گزر ہوا تو غیر معمولی کشش محسوس کی گفتگو کے بعد اسلامی اصول کی فلاسفی خرید کر چلے گئے۔ کچھ دن بعد بتایا اس کتاب نے ان کی زندگی بدل دی ہے وہ حق جس کی تلاش میں تھا ,وہ سوالات جن میں الجھا ہوا تھا ان سب کے جوابات اس سے مل گئے ہیں۔ مزید تحقیق سے جب علم ہوا کہ اس کے مصنف اس زمانہ کے مسیح موعود ؑ ہیں تو یقین ہوگیا کہ یہ مصنف اپنے دعوٰی میں سچا ہے اور اسلام کا سچا خادم ہے ۔پھر بیعت کر کے اسلام میں شامل ہو گئے۔
اس سال 718 مختلف کتب 1 کروڑ 43 لاکھ سے زائد کی تعداد میں طبع ہوئیں۔ 49 زبانوں میں تراجم شائع ہوئے ۔وکالت ترسیل کی رپورٹ ہے کہ 54 زبانوں میں 3لاکھ 8 ہزار سے زائد کتب مختلف ممالک میں بھجوائیں 5 لاکھ پاؤنڈ سے زیادہ کی کتب ہیں۔ جماعت کے ذریعہ فری لٹریچر کا جو کام ہے۔ مختلف ممالک میں 2908 فولڈر 1 کروڑ 39 لاکھ سے زائد کی تعداد میں تقسیم ہوئے اور 1 کروڑ 33 لاکھ افراد سے زائد تک پیغام پہنچا ۔
دنیا بھر میں 26 زبانوں میں جماعتی122 رسائل اور جرائد شائع ہو رہے ہیں۔ دنیا کے 82 ممالک میں 519 سے زائد ریجنل اور مرکزی لائبریریوں کولند ن اور قادیان سے کتب بھجوائی گئی ہیں۔
حضرت مسیح موعود ؑ کے 28 کتب کے ہندی تراجم شائع ہو چکے ہیں اور 27 مراحل میں ہیں۔

عربی ڈیسک

عربی ڈیسک کے تحت گزشتہ سال تک جو کتب اور فولڈر تیار ہوئے ان کی تعداد 145 ہے۔ اس سال سیر روحانی، ملائکۃ اللہ، مین آف گاڈ، فقہ المسیح کے تراجم شائع ہوئے اور روحانی خزائن جلد20 کا ترجمہ آخری مراحل میں ہے۔ ایم ٹی اے اور حوار المباشر کے بارے میں جو رپورٹ ہے کافی واقعات ہیں الجزائر کا ایک واقعہ بیان کر دیتا ہوں وہ کہتے ہیں میں نے حال ہی میں بیعت کی ہے۔ میں بھی ایم ٹی اے العربیہ دیکھتا تھا۔ میرا معمول تھا کہ شیخ کا پروگرام سنتا تھا۔ ایک دن میں سویا اور خواب میں دیکھا کہ امام مہدی چھڑی سے میر ی ٹانگ کو ضرب لگا رہے ہیں میری بیوی اور بچے ان کے پیچھےکھڑے ہیں۔ رات کے دو بج رہے تھے میں نے انٹرنیٹ کھولا تو کیا دیکھتا ہوں کہ شیخ کشک صاحب امام مہدی کے بارے میں گفتگو کر رہے ہیں، مجھےاحمدیت کی سچائی کا یقین ہو گیااور پھر بیعت کا فیصلہ کر لیا۔

رشین و بنگلہ ڈیسک

رشین ڈیسک نے بھی تمام خطبات کا ترجمہ تقریبا کر دیا ہے۔ اس کے علاوہ دوسرےلٹریچر کا بھی ترجمہ ہو رہا ہے ۔ رشین قرآن کریم کا ترجمہ چوتھا ایڈیشن آرہا ہے۔ ملفوظات جلدنہم ،دہم کا اور مختلف لٹریچر کا ترجمہ شامل ہے۔ ازبک اور کرگس تراجم بھی ویب سائیٹ پر دے رہے ہیں۔
بنگلہ ڈیسک بھی کتب اور خطبات کا ترجمہ کر رہے ہیں۔

فرنچ ڈیسک

فرنچ ڈیسک ایم ٹی اے پر خطبات کا ترجمہ کر رہا ہے۔ جماعت کے لٹریچر کا ترجمہ کیا جا رہا ہے ۔ فرنچ ویب سائیٹ بھی ہے جس پرمختلف چیزیں ڈالتے رہتے ہیں۔ 1.3ملین سے زائد زائرین نے مشاہدہ کیا ہے۔تین ملین سے زائد پیچ ویورز (Viewers)ہو چکے ہیں۔ سوالات کا جواب ای میل سے دیا جاتا ہے۔مندرجہ ذیل کتب تیار ہیں ذکر الٰہی، گناہ سے نجات کیونکر مل سکتی ہے، پاکٹ سائز فرنچ قرآن اور ذکر الہٰی۔

چینی ڈیسک

چینی ڈیسک نے دیباچہ تفسیر القرآن میں شامل لائیو آف محمد کا ترجمہ کر کے دے دیا ہے۔ حضورانور نے فرمایا چینی صاحب کے دور میں کافی کام ہواتھا۔ اللہ تعالیٰ ایسے وسائل پیدا کرے کہ خالص چینی ہم کو مل جائے۔ ہستی باری تعالی کا ترجمہ آخری مراحل میں ہے۔ چینی ویب سائیٹ کو بھی اپ ڈیٹ کر رہے ہیں۔

ٹرکش ڈیسک

ترکش ڈیسک نے دوران سال ان کتب کو آخری شکل دی۔ احمدی اور غیر احمدی میں فرق، زھق الباطل، ظہور مسیح و مہدی، ہمارا خدا، احیا الدین اور جماعت احمدیہ، وقف نو کے سلیبس، شہادۃ القرآن، نشان آسمانی، توضیح مرام نشان آسمانی اورروئیداد جلسہ کے ترجمہ کی نظر ثانی ہو رہی ہے۔

سواحیلی ڈیسک

سواحیلی ڈیسک میں بھی کام ہو رہا ہے ایم ٹی اے کے مختلف پروگرام کا ترجمہ کرتے ہیں ۔ یوکے کے علاوہ ربوہ اور افریقہ میں ڈیسک کام کر رہا ہے۔ ازالہ اوہام، سبزاشتہاراور ایک غلطی کا ازالہ کا ترجمہ ہوا۔

انڈونیشن ڈیسک

انڈونیشن ڈیسک مارچ 2018ء سے قائم ہے۔ محمود احمد صاحب مربی صاحب اس کےانچارج ہیں۔ خطبات کا باقاعدہ ترجمہ کر رہے ہیں۔ دوران سال حضرت مسیح موعود ؑ کی کتب راز حقیقت، محمود کی آمین، پیغام صلح اورگناہ سے نجات کیوں کر مل سکتی ہے کا ترجمہ ہوا۔

سپینش ڈیسک

سپینش ڈیسک نے دوران سال سبز اشتہار، لیکچر لدھیانہ، کشتی نوح، برکات الدعا اور احمدیت دا ٹرو اسلام کا بھی ترجمہ کیا ہے۔ سپینش ویب سائیٹ بھی کام کر رہی ہے۔

لیف لیٹس ، فلائرز کی تقسیم اور بک اسٹالز

اس سال موصولہ رپورٹ کے مطابق 5545 نمائشیں منعقد ہوئیں جن کے ذریعے 20لاکھ 868افراد تک پیغام پہنچا۔ 14964 بک سٹال لگے اور 22 لاکھ4 ہزار افراد تک پیغام پہنچا۔ لیفلٹس کی تقسیم مجموعی طورپر 89 ممالک میں 1 کروڑ 57 لاکھ سے زائد تقسیم ہوئے۔ 2 کروڑ سے زائد تک پیغام پہنچا۔ جرمنی، یوکے، آسٹریلیا، سپین اور ہالینڈ میں فارغ التحصیل مربیان جا کر ہر سال پمفلٹ اور فلائرز کی تقسیم کا کام کرتے ہیں۔

بک اسٹال کے واقعات

افریقہ میں بینن میں بک سٹال پر ایک دوست آئے اور قرآن کو ہاتھ لگا کر کہنے لگے کہ کیا اس کو دیکھ سکتا ہوں۔ کیونکہ دوسرے لوگ تو قرآن کو ہاتھ بھی نہیں لگانے دیتے۔ ان کو بتایا گیا کہ ساری کتب ساری انسانیت کیلئے ہیں۔ انہوں نے قرآن خریدا اور پوچھا کون سی کتب زیادہ تبدیلی پیدا کرے گی ان کو کشتی نوح اور اسلامی اصول کی فلاسفی دی گئی۔ نائیجریا میں بھی بک سٹال لگائے گئے۔ کرناٹک میں ایک بک فئیر پر دھرما پور میں جہاں ابھی تک جماعت کا قیام نہیں ہوا۔ وہاں ایک سابق مسلمان پولیس اہل کار سٹال پر آئے اور جماعت کی طرف سے دنیا کی امن عالم کی کوششوں کے بارے میں بتایا گیا تو انہوں نے کہا مجھے بھی خواہش ہے کہ اس میں حصہ لوں۔ وہ 300 لیف لٹس لے گئے اور جماعت کو دعوت دی کہ ان کے علاقہ میں جا کر کام کریں ۔جرمنی میں ایک جگہ لیف لیٹ لے کر گئے۔ گاؤں کے گھر لیٹربکس میں ڈالا وہ عورت فورا باہر آئی اور نکال کر پڑھنے لگی۔

پریس اور میڈیا

پریس اور میڈیا کا جو آفس لندن میں ہے۔ اس کے جلسہ سالانہ یوکے کی 91 خبروں کے ذریعہ 76ملین لوگوں تک خبریں پہنچیں۔ پیس سمپوزیم کی خبریں شائع کیں۔ چیریٹی واک کی 105 خبریں 86 ملین تک گئیں۔ احمدیہ پراسیکیوشن کی18 خبریں جو 26افرادملین تک پہنچیں۔ متفرق خبریں جو 6.6ملین تک پہنچیں۔ نیوزی لینڈ کے واقعہ پر بیان 3.4ملین لوگوں تک پہنچا۔ رمضان کے حوالے سے 2.5ملین تک پیغام پہنچا۔

وقف نو

واقفین نو کی کل تعداد 69ہزار219 ہے ۔ جن میں سے 41 ہزار 297 لڑکے ہیں اس سال نئے شامل ہونے والے 1345 ہے۔ تجدید وقف نو کے 14ہزار940 فارم موصول ہوئے ہیں۔ واقفین کی تعدا کے لحاظ سے پاکستان، جرمنی، یوکے، انڈیا پھرکینیڈا ہے۔

مخزن تصاویر

مخزن تصاویر کے تحت کام ہو رہا ہے ۔ریویو آف ریلیجئن ہے۔ حضرت مسیح موعود ؑ نے اس کااجراء فرمایا تھا اور جنوری 1902ءمیں شائع ہوا117  سال سےچل رہا ہے ۔ اور انٹرنیشنل پلیٹ فارم پر تبلیغ کا ذریعہ بن چکا ہے ۔اب انگریزی کے علاوہ جرمن، سپینش اور فرنچ ایڈیشن بھی شائع ہو رہے ہیں۔ جرمن رسالہ کو بند کر کے اس کی جگہ ریویو آف ریلیجئن کا اجراء ہوا ہے۔ ایک چیف نے کہا کہ میں ریویو آف ریلیجئن جرمنی زبان میں اشاعت پر جو بھی مدد ہوئی کروں گا ۔

الحکم ہفت روزہ ہے ۔ یہ بھی مختلف ویب سائیٹس اور ایپلیکیشن پہ ہے۔ انگریزی دان طبقہ کیلئے کافی مدد گار ثابت ہو رہا ہے۔ پھرالفضل انٹرنیشنل ہے۔ یہ اس سال مورخہ 27 مئی 2019ءکو خلافت نمبرکے ساتھ سہ روزہ اور کلرڈ پرنٹ ہو رہا ہے۔ اب 14جون سے ویب سائیٹ اور موبائل فون اپلیکیشن پر بھی موجود ہے۔ اخبارات میں جماعتی خبروں کی جو اشاعت ہوئی مجموعی طور پر 3376 اخبارات میں 9755 جماعتی مضامین اور آرٹیکل شائع ہوئے پڑھنے والوں کی مجموعی تعداد 50 کروڑ سے زائد ہے۔
احمدیہ آرکائیوسنٹر بہت اچھا کام کر رہا ہے۔ جماعتی ویب سائیٹ الاسلام 294 انگریزی اور 1000 اردو کتب ڈالی گئی ہیں۔ موبائل فون پر دیکھا جا سکتا ہے۔ خطبات جمعہ کا متن اور اردو میں سرچ انجن کے ساتھ دستیاب ہے۔ حقیقۃالوحی اور فائیو والیم کمنٹری آئی فون اپلیکیشن کا اجراء ہوا ہے۔ آئی فون پر قرآن کریم ایپلیشکن کونئے فونٹ کے ذریعہ مزید بہتر بنایا گیا ہے۔

ایم ٹی اے

اس وقت ایم ٹی اے پانچ چینل ایم ٹی اے اولی، ثانیہ، افریقہ اولیٰ، افریقہ ثانیہ اور ایم ٹی اے العربیہ ہیں۔ ان پر 17 مختلف زبانوں میں رواں ترجمہ کئے جا رہے ہیں۔
اب سیٹلائیٹ پر وسعت بہت زیادہ ہو گئی ہے۔ نئے معاہدوں کی تجدید کی گئی ہے۔ کینیڈا اور یو ایس اے کیلئے نئی بہترین کوریج پر نشریات شروع کی گئی ہیں۔ امریکہ اور کینیڈا کے ناظرین ایم ٹی اے پرتمام تراجم بھی سن سکتے ہیں۔
برکینا فاسو میں جماعت کا اپنا ٹی وی اسٹیشن ہےجو خطبات اور دیگر پروگرام بھی کرتا ہے۔ ایم ٹی اے افریقہ کی 10 ممالک میں شاخیں کام کر رہی ہیں۔ دنیا کی 18زبانوں میں خطبات حضورانور کے تراجم آن لائن ویب سائیٹ پر دستیاب ہیں۔ ایم ٹی اے افریقہ کیمرون کے چھ بڑے شہروں میں کیبل سسٹم کے ذریعہ دیکھا جاتا ہے۔
احمدیہ ریڈیو اسٹیشن کے ذریعہ بہت کام ہو رہا ہے۔ افریقہ میں ریڈیو کے ذریعہ اللہ کے فضل سے بیعتیں بھی ہو رہی ہیں۔ پروگرامز کے ذریعہ تربیت کے معیار بہتر ہیں۔
مجلس نصرت جہاں کےتحت 12 ممالک میں 37 ہسپتال ہیں۔ جن میں 46 مرکزی اور 13 مقامی ڈاکٹرز ہیں ۔جبکہ 685 سکول کام کر رہے ہیں جن میں 23 مرکزی اساتذہ ہیں۔
9 ممالک میں 195 صاف پانی کےنلکے لگائے گئے۔ پانچ ممالک میں 5 سولر پمپ لگائے۔اب تک کل 2700 سے زیادہ پانی کے نلکے لگ چکے ہیں۔ سولر سسٹم کے ذریعہ 75 نئے سسٹم لگ چکے ہیں۔ ماڈل ویلیج جو بنائےگئے ہیں ۔ان میں دوران سال 3 گاؤں مکمل ہوئے ہیں ۔تعمیری پروجیکٹس بھی جاری ہیں ۔ ہیومینیٹی فرسٹ کےذریعہ آنکھوں کے فری آپریشنزمختلف ممالک میں کئے جارہے ہیں اس سال 632 آپریشن آنکھوں کے فری کئے گئے۔ اب تک اس کے ذریعہ 14ہزار723 افراد کے فری آپریشن کئے گئے۔برکینا فاسومیں 8ہزار211 آپریشن ہوئے۔ قیدیوں سے رابطہ اور خبر گیری کے کام ہو رہے ہیں۔

نومبائعین

نائیجریا میں 64 ہزار، مالی میں 5 ہزار، سیرالیون میں 7ہزار، سینیگال میں 18ہزار، کیمرون میں 11ہزاراورآئیوری کوسٹ میں 19ہزار نومبائعین سے رابطے ہوئے۔
ریفریشر کورس 63 ممالک میں دوران سال نو مبائعین کے پروگرامز ہوئے جس میں شاملین کی تعداد 116640 ہے اور1326 اماموں کو ٹریننگ دی گئی۔

بیعتیں

اس سال 6 لاکھ 68 ہزار 527 بیعتیں ہوئی ہیں۔ گھانا کے مربی صاحب لکھتے ہیں کہ 90 کلو میٹر دور ایک جگہ گئے واپسی پر کچھ لوگوں کو دیکھا تو ان کو تبلیغ کی گئی اور تبلیغ کے اختتام پر 169 لوگوں نے بیعت کی۔ چیف بار بار سلام کرتا تھا اور چیف کہتا کہ تم فرشتے ہو۔حضورانورنے سعید روحوں کےبیعت کرکے جماعت احمدیہ میں شامل ہونے کے واقعات بیان فرمائے۔
حضورانورنے فرمایا غیرمعمولی تبدیلیاں نو مبائعین میں پیدا ہو رہی ہیں۔ شراب پینے والے شراب سے نفرت کرنے لگ گئے ہیں۔ اگر کسی کا شراب کا کاروبار تھا تو اس نے بند کر دیا۔ اللہ تعالیٰ کے فضل سے بڑی مضبوط جماعتیں قائم ہو رہی ہیں۔ اللہ تعالیٰ ان کو ثبات قدم عطا فرمائے۔ آمین
مخالفین کے بد انجام بھی ہمیں نظر آتے ہیں۔ نئی آنے والی بیعتوں میں قبولیت دعا کے ذریعہ ایمان مضبوط ہو رہا ہے ۔ نصرت الہی اور حفاظت الہی کے بہت سارے واقعات ہیں کہ کس طرح خداتعالیٰ کی طرف سےجماعت کی مدد فرمائی جاتی ہے۔
اللہ تعالیٰ ان تمام نئے شامل ہونے والوں کو ثبات قدم عطا فرمائے اور ایمان و ایقان میں ثبات دے اور حضرت مسیح موعود ؑ کو پہلے سے بڑھ کر پہچاننے والے ہوں۔ تا کہ جلد از جلد ساری دنیا کو حضرت محمد ﷺ کے جھنڈے کےنیچے لانے اور توحید کو پھیلانے والے بن جائیں ۔آمین

(مرتبہ : مبشر آفتاب مبشر)

image_printپرنٹ کریں