skip to Main Content
چندے کی ابتداء شروع سے ہے

چندے کی ابتداء اس سلسلہ سے ہی نہیں ہے بلکہ مالی ضرورتوں کے وقت نبیوں کے زمانہ میں بھی چندے جمع کئے گئے تھے۔ایک وہ زمانہ تھا کہ ذراچندے کااشارہ ہواتوتمام گھرکامال لا کر سامنے رکھ دیا۔پیغمبرخداصلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایاکہ حسب مقدورکچھ دینا چاہئے اورآپ کی منشاءتھی کہ دیکھاجاوے کہ کون کس قدرلاتاہے۔ابوبکرؓنے سارامال لاکرسامنے رکھ دیا۔اورحضرت عمرؓنے نصف مال۔آپ نے فرمایا کہ یہی فرق تمہارے مدارج میں ہے اورایک آج کازمانہ ہے کہ کوئی جانتاہی نہیں کہ مدددینی بھی ضروری ہے،حالانکہ اپنی گزران عمدہ رکھتے ہیں۔

(ملفوظات جلد سوم صفحہ 361)

image_printپرنٹ کریں