skip to Main Content
حافظ نصیب احمد سید: ایک نو احمدی ملک آرمینیا کا مختصر تعارف

حضور انور نےجلسہ سالانہ یوکے2019ء کے دوسرے روز کے خطاب میں جماعت احمدیہ پر ہونے والے اللہ تعالیٰ کےفضلوں اور نعماء الٰہی کا ذکر کرتے ہوئےفرمایا کہ “اللہ تعالیٰ کے فضل سے اب تک دنیا کے 213 ممالک میں جماعت احمدیہ کا پودا لگ چکا ہے۔امسال اس فہرست میں ایک نئےملک آرمینیا کا اضافہ ہوا ہے”
اس کا سرکاری نام جمہوریہ آرمینیا ہے۔یہ ایک زمین بند ملک ہے جو مغربی ایشیا میں واقع ہے۔اس کے مغرب میں ترکی، (Armenia) آرمینیا
شمال میں جارجیا، مشرق میں آذربائیجان اور جنوب میں ایران واقع ہے۔اس ملک کا مذہب عیسائی ہے اور اس ملک کے عیسائی اس بات پر فخر کرتے ہیں کہ 301 عیسوی میں عیسائیت کو مذ ہب کے طور پر قبول کرنے والا پہلا ملک آرمینیا تھا۔ اس کا رقبہ29ہزار 743 مربع کلو میٹر ہے ۔آرمینیا کا پرچم 3 رنگوں پر مشتمل ہے ،سب سے اوپرلال درمیان میں نیلا اور نیچے پیلا رنگ ہے۔اس کی سرکاری زبان آرمینیائی زبان ہے۔جبکہ اس کی آبادی2016ء کے مطابق29لاکھ 24ہزار 816ہے اس کا دار الحکومت یریوان (Yerevan)ہے جو کہ آرمینیا کا سب سے بڑا شہر ہے اور آرمینیا کے جنوب مغرب میں واقع ہے۔یہ دنیا کے قدیم ترین مسلسل آباد شہروں میں سے ایک ہے۔اس شہر کا قیام 782 قبل مسیح میں ہوا۔اس کا رقبہ 88 مربع میل ہے۔آرمینیا نے 21 ستمبر1991ء کو سوویت یونین سے آزادی حاصل کی ۔اس روز تقریبات منعقد کی جاتی ہیں اور خوشی کے اظہار کے لیے مقامی لوگ آتش بازی اورتقریبات کا انعقاد کرتے ہیں۔آرمینیا بنیادی طور پر 11 علاقوں میں تقسیم ہے۔دس علاقے دس صوبہ جات ہیں۔جبکہ گیارہواں دار الحکومت الگ سے انتظامی علاقہ ہے۔آرمینیا میں شرح بے روز گاری 17 فیصد ہے۔جبکہ ٹریفک دائیں سمت چلتی ہے۔آرمینیا کا بین الاقوامی فون کوڈ +374 ہے۔آرمینیا کی ایک پہچان یہ بھی ہے کہ دنیا کا قدیم ترین چرچ بھی آرمینیا میں موجود ہے۔آرمینیا میں احمدیت کے نفوذ کی تفصیل کچھ اس طرح ہے۔2008 اور 2009 میں جارجیا سے مربیان اور احباب جماعت کے ذریعہ آرمینیا میں جماعت کا پیغام پہنچایا گیا۔2017 میں ایک نو مسلم نے جماعت کا پیغام سن کر ایک تبلیغی نشست میں احمدیت قبول کر لی تھی۔امسال فروری میں جماعت کی تبلیغ سے ایک اورفردنے احمدیت قبول کی۔اس طرح آرمینیا میں باقاعدہ طور پراحمدیت کا پودا لگا۔اللہ تعالیٰ کرے کہ یہ پودا جلد ایک تناور درخت بن جائےاور ہم جلدحضرت مسیح موعود ؑکی تبلیغ کو آرمینیا کے کناروں تک پہنچتا ہوا دیکھیں۔آمین

image_printپرنٹ کریں