skip to Main Content
سید شمشاد احمد ناصر۔امریکہ : امریکہ کے مختلف شہروں میں پریس اور میڈیا میں حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ کے خطابات کے ذریعہ تبلیغ احمدیت

اللہ تعالیٰ کا خاص فضل ہے کہ اس زمانے میں جو کہ مسیح موعودؑ کا زمانہ ہے، اشاعت اسلام کے کئی نئے طریقے ایجاد ہوئے ہیں۔ اِن میں ایک ذریعہ پریس اور میڈیا کے ساتھ رابطہ ہے۔ خداتعالیٰ کے فضل سے اس طریق پر بھی حضور انور کی دعائوں سے ہمیں کامیابی مل رہی ہے۔
عباسی دور خلافت کے زمانے میں جب کچھ مسلمانوں نے جو سائنسی اور طبی علوم پر مہارت حاصل کر لی تھی اِن سائنس دانوں پر تو کفر کے فتوے لگ گئے یا اِن کی تصانیف کو گستاخی قرار دے کر اِن سے بُرا سلوک کیا گیا۔ اور کتب خاکستر کردی گئیں۔ بغداد کی گلیوں میں بس اگر مناظر تھے تو اِن موضوعات پر کہ سوئی کی نوک پر بیک وقت کتنے فرشتے بیٹھ سکتے ہیں۔ کوا حلال ہے یا حرام، مسواک کا شرعی سائز کتنا ہونا چاہئے۔ ایک مناظرہ اس بات پر رہا تھا کہ عربی میں ‘‘والضالین’’ کہتے وقت ض کے لئے آواز دال کی نکالنی ہے یا زال کی۔
اس وقت پھر ہلاکو خان نے بغداد پر حملہ کیا اور سب کی تہس نہس کردی۔ یہ واقعات غلط ہیں یا صحیح۔ لیکن مسلمانوں کی تاریخ یہی بتاتی ہے کہ شدت پسندوں نے اور انتہاء پسندوں نے جس قدر نقصان پہنچایا ہے کسی اور چیز نے اتنا نہیں پہنچایا۔ بلکہ ایک وقت میں تو خود علماء نے پریس کی اور کتب کی خصوصاً قرآن شریف کے ترجمہ کی اشاعت کی مخالفت کی تھی۔شکر ہے، صد شکر ہے کہ اب یہ وقت آن پہنچا ہے کہ ہم آزادی کے ساتھ ہر جگہ پریس اور میڈیا سے کام لے سکتے ہیں۔
اسلام کی صحیح تعلیم۔ رسول ﷺ کے مشن کی اشاعت کی تکمیل اس دور اور اس زمانے میں خلفاء احمدیت ہی اسلام کی صحیح تصویر ان ساری دنیا کے سامنے پیش کر رہے ہیں۔ حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ کے خطبات ہی اسلام کی صحیح آئینہ دار ہیں۔ اس لئے اس علاقہ میں کوشش جاری ہے اور خداتعالیٰ کے فضل سے اس میں کامیابی حاصل ہورہی ہے۔
ہمارے یہاں کچھ اخبارات عربی، اردو،انگریزی اور دیگر زبانوں میں شائع ہوتے ہیں۔ خدا تعالیٰ کے فضل سے ایک عربی اخبار ‘‘الا نتشار العربی’’ جس کی ایڈیٹر ایک مسلمان خاتو ن ہیں۔ حضور انور ایدہ اللہ تعالیٰ کے خطبہ جمعہ کے خلاصہ کو اپنے اس اخبار میں باقاعدگی سے شائع کر رہی ہیں۔ جب حضور انور ایدہ اللہ تعالیٰ لاس اینجلس کے دورہ پر تشریف لائے تھے تو پریس کانفرنس میں یہ خاتون ‘‘فاطمہ عطیہ’’ موجود تھیں اور حضور سے کئی سوال بھی کئے تھے۔
اسی طرح ایک اور اخبار ‘‘الا خبار’’عربی میں لاس اینجلس سے شائع ہوتا ہے۔ اس کے ایڈیٹر مسٹر سام صبا ہیں۔ یہ عیسائی ہیں مگر بہت اچھے آدمی ہیں، یہ بھی حضور کے خطبہ جمعہ کا خلاصہ شائع کردیتے ہیں۔ اور جماعتی خبریں بھی۔ ایریزونا سٹیٹ سے ایک اخبار نکلتا ہے ‘‘ایشیا ٹوڈے’’ اس اخبار میں حضور انور ایدہ اللہ کے خطبہ جمعہ کے خلاصہ اردو اور انگریزی زبان میں شائع ہوتا ہے۔ اور جماعتی خبریں بھی ۔
ڈیٹرائٹ کے مضافات میں ریڈیو سٹیشن سے بھی اللہ تعالیٰ کے فضل سے ہمارا رابطہ ہے۔ اس طرح لوکل انگریزی اخبارات سے بھی۔ ایک اخبار ‘‘گزٹ’’ہے اس میں بھی اللہ تعالیٰ کے فضل سے ہماری لوکل سرگرمیوں کی خبریں شائع ہوتی ہیں۔ اللہ تعالیٰ ہمیں بہتر رنگ میں اِن ذرائع سے فائدہ اُٹھانے کی توفیق دے۔ لوکل اخبارات میں ہمارے انٹرفیتھ، عید اور مسجد میں دیگر پروگراموں کی خبریں شائع ہوتی ہیں۔

image_printپرنٹ کریں