skip to Main Content
امۃ الباری ناصر۔امریکہ:بھنور میں

رد کر کے ضیاء گر گئے ظلمت کے بھنور میں
پھر گرتے گئے نت نئی آفت کے بھنور میں

شنوائی ہے باقی نہ ہے گویائی کی طاقت
بینائی سے عاری ہیں جہالت کے بھنور میں

انساں جو خدا ترسی میں تھا رشکِ ملائک
بدتر ہے بہائم سے رزالت کے بھنور میں

کیوں قتل ہوئے ، کس نے کیا کچھ نہیں معلوم
سہما ہوا ہر شخص ہے دہشت کے بھنور میں

عبرت کے لئے دیکھئے ان قوموں کا انجام
غارت ہوئیں جو کبر کے نخوت کے بھنور میں

لے جائے گا اب اور کہاں ضد و تعصب
جاتا رہا ایماں بھی عداوت کے بھنور میں

ہے ظل الٰہی کا تقاضا یہ ازل سے
جاگے نہیں جو سو گئے عظمت کے بھنور میں

 

image_printپرنٹ کریں